نہال ہاشمی ڈسپلنری کمیٹی کے سامنے پیش ،خودکو بے گناہ قرار دیدیا

نہال ہاشمی ڈسپلنری کمیٹی کے سامنے پیش ،خودکو بے گناہ قرار دیدیا

اسلام آباد (این این آئی)سینیٹر نہال ہاشمی گزشتہ ماہ وزیراعظم نواز شریف اور ان کے خاندان کے اثاثوں کے خلاف تفتیش پر دیے گئے بیان پر مسلم لیگ نواز کی جانب سے تشکیل دی گئی ڈسپلنری کمیٹی کے سامنے پیش ہوئے اور خود کو بے گناہ قرار دے دیا۔راجہ ظفرالحق کی سربراہی میں پانچ رکنی ڈسپلنری (بقیہ نمبر59صفحہ12پر )

کمیٹی نہال ہاشمی کے معاملے کی تحقیقات کررہی ہے جس کو وزیراعظم نواز شریف نے تشکیل دیا تھا اور یہ کمیٹی 11 جون کو نہال ہاشمی کے خلاف مناسب کارروائی کیلئے رپورٹ جمع کرادے گی۔نہال ہاشمی نے کمیٹی کے سامنے پیشی کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ میری تقریر کو سیاق سباق سے ہٹ کر لیاگیا۔انہوں نے کہاکہ میں نے کمیٹی کو بتایا کہ میری تقریر 14منٹ کی تھی لیکن میڈیا اور سوشل میڈیا پر اس کا ایک چھوٹا سا حصہ پیش کیا گیا اور میری تقریر کو غلط طور پر بیان کیا گیا۔نہال ہاشمی کا کہنا تھا کہ وہ 8 دن سے تنہا تھے اور آج پہلی بار اپنی پارٹی کے لوگوں سے ملے ہیں اوراس واقع کے بعد میرے سارے گارڈز بھی ہٹالیے گئے۔انہوں نے کہاکہ میں نے ایک لفظ بھی عدالت کے خلاف نہیں کہا اور میرا ہدف پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان تھے جبکہ ریاستی ادارے یا سپریم کورٹ کی جانب سے تشکیل دی گئی جوائنٹ انوسٹی گیشن ٹیم (جے آئی ٹی) میرا ہدف نہیں تھے۔لیگی رہنما کا کہنا تھا کہ میڈیا اور سوشل میڈیا نے ان کے الفاظ کو توڑ مروڈ کر پیش کیا۔انھوں نے کہا کہ میرا بیان عمران خان کے رویہ کا ردعمل تھا لیکن 300کنال پر رہنے والوں کو کوئی شوکاز نوٹس نہیں دیا جاتا۔عمران خان کو مخاطب کرتے ہوئے نہال ہاشمی نے کہا کہ خان صاحب!ساری دنیا آپ کا پیچھا چھوڑدیگی لیکن میں آپ کا پیچھا نہیں چھوڑوں گا۔

نہال ہاشمی

مزید : ملتان صفحہ آخر