نان سیلری بجٹ فنڈ براہ راست سکولز کونسلز کے اکاؤنٹس میں منتقل کرنیکا حکم

نان سیلری بجٹ فنڈ براہ راست سکولز کونسلز کے اکاؤنٹس میں منتقل کرنیکا حکم

ملتان ( سٹاف رپورٹر ) سکولز سربراہان کی سنی گئی ۔نان سیلری بجٹ فنڈ(این ایس بی) اکاؤنٹس آفس کے بجائے براہ راست سکولز کونسلز کے اکاؤنٹس میں ٹرانسفر کرنے کاحکم دے دیا گیا ۔ بجلی بلوں کی مد میں تمام ہائی اور ہائر سیکنڈری گرلز و بوائز سکولز کو ایک لاکھ 80ہزار روپے دئیے جائیں گے ۔بتایا گیا ہے کہ اس سے قبل شکایات تھیں کہ این ایس بی فنڈ اکاؤنٹس آفس کے ذریعے سے سکولز کونسلز کے (بقیہ نمبر38صفحہ12پر )

اکاؤنٹس میں منتقل ہوتا تھا اور سکولز سربراہان کو اکاؤنٹس آفس کے عملے کو رشوت دینا پڑتی تھی۔بعد میں دوبارہ حکام کی طرف سے لیٹر جاری کیا گیا کہ این ایس بی فنڈ اکاؤنٹس آفس کے ذریعے سکولز کونسلز کو ملے گا ۔ اس کی چیف ایگزیکٹو آفیسر ایجوکیشن اتھارٹی اعزاز احمد جوئیہ نے مخالفت کی کہ سکولز سربراہان کی شکایت ہے کہ اکاؤنٹس آفس کا عملہ رشوت کے بغیر کام نہیں کرتا ۔اس لئے این ایس بی فنڈ براہ راست سکولز کونسلز کے اکاؤنٹس میں بھجوایا جائے۔ اس سلسلے میں ضلع انتظامیہ سے بھی بات کی گئی جس پر این ایس بی فنڈ براہ راست سکولزکونسلزکے اکاؤنٹس میں ٹرانسفر کرنے کا حکم دیا گیا ہے ۔واضح رہے کہ سکولز کے لئے یوٹیلٹی بلز کی گرانٹ نہ ملنے کے باعث سکولز سربراہان شدید پریشان تھے اور اپنی جیب سے اور اساتذہ سے رقم جمع کرکے حتیٰ کہ ادھار لینے پر بھی مجبور ہو گئے تھے ۔ اب این ایس بی فنڈملنے سے انہیں ریلیف ملے گا ۔علاوہ ازیں این ایس بی فنڈ میں سکولز کے بلاکس ‘ کمروں ‘ بیت الخلااور ٹیبلٹ کی خریداری کے لئے بھی رقم مختص کی گئی ہے ۔ہر کمرے کی تعمیر کے لئے ایک ایک لاکھ روپے اور ٹیبلٹ کی خریداری کے لئے 20‘20ہزار روپے مختص کئے گئے ہیں ۔ دریں اثنا سکولزسربراہان نے حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ یوٹیلٹی بلز کی ادائیگی کے لئے ایسا سسٹم بنایا جائے کہ سکولز سربراہان کو پریشانی نہ ہو اور وہ بجلی ‘ گیس ‘ واٹر سپلائی ‘ ٹیلیفون کے بلز کی ادائیگی کے لئے مارے مارے نہ پھرتے رہیں۔

نان سیلری بجٹ

مزید : ملتان صفحہ آخر