سپریم کورٹ ،حسین نواز کی تصویر لیک ہونے کا معاملہ ،جے آئی ٹی سے 12جون کو جواب طلب

سپریم کورٹ ،حسین نواز کی تصویر لیک ہونے کا معاملہ ،جے آئی ٹی سے 12جون کو جواب ...

اسلام آباد ( صباح نیوز)سپریم کورٹ نے پاناما عملدرآمد کیس کی گزشتہ سماعت کا تحریری حکم نامہ جاری کردیا ۔جسٹس اعجاز افضل خان کی سربراہی میں جسٹس شیخ عظمت سعید اور جسٹس اعجاز الاحسن پر مشتمل عمل درآمد بینچ نے 7جون کی سماعت کے تحریری حکم نامے میں جے آئی ٹی سے حسین نواز کی تصویر لیک ہونے کے معاملے پرجواب طلب کیا گیا ہے اور معاملہ پیر 12جون کو دن ایک بجے سماعت کیلئے مقرر کیا گیا ہے جبکہ پاناما لیکس کیس کے فیصلے پر عمل درآمد کے معاملے میں آئندہ سماعت 22جون کوہوگی ۔تحریری حکمنامے میں قرار دیا گیا ہے کہ جے آئی ٹی کی تفتیش درست سمت میں آگے بڑھ رہی ہے توقع ہے کہ مقررہ وقت کے اندر تفتیش کا عمل مکمل ہوجائے گا۔حکمنامے میں تصویر لیک ہونے کے بارے حسین نوازکی درخواست کو منظور کرتے ہوئے جے آئی ٹی اس پر جواب طلب کیا ہے اور کہا گیا ہے کہ جے آئی ٹی کے سربراہ نے سربمہر رپورٹ پیش کی ،رپورٹ میں مسائل کی نشاندہی کی گئی ہے۔ جے آئی ٹی تحقیقات میں درپیش مسائل اور رکاوٹوں سے متعلق الگ درخواست دائرکرے۔عدالت نے جے آئی ٹی کی رپورٹ کو سیل کر کے رجسٹرار کو جمع کرانے کی ہدایت کردی۔

مزید : کراچی صفحہ اول