جمشید دستی کی گرفتاری، پنجاب حکومت نے اختیارات سے تجاوز کیا ہے: اپوزیشن

جمشید دستی کی گرفتاری، پنجاب حکومت نے اختیارات سے تجاوز کیا ہے: اپوزیشن

ملتان(نیوز رپورٹر)رکن قومی اسمبلی شیخ رشید احمد کے ساتھ پارلیمنٹ لاؤنج میں ہونیوالے ناگوار واقعے اور رکن قومی اسمبلی جمشید دستی کی گرفتاری پر اپوزیشن جماعتوں کے قائدین نے سخت رد عمل دیا ہے ان دونوں واقعات میں وفاقی اور پنجاب حکومت کو مورد الزام ٹھہراتے ہوئے شدید ہدف تنقید بنایا ہے تحریک انصاف کے صوبائی صدر اعجاز چوہدری،رکن قومی اسمبلی ظہیر الدین علیزئی،مخدومزادہ زین قریشی،سابق ایم پی اے نفیس احمد انصاری،سابق ایم پی اے عثمان بھٹی،چوہدری خالد جاوید ورائچ اور ملک عاصم ڈیہڑ نے ’’پاکستان‘‘ سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ (ن)لیگ بوکھلاہٹ کا مظاہرہ کررہی ہے ایک شخص کو دانستہ پاس جاری کرکے20سالہ پرانے ایشو کے ذریعے ممبر پارلیمنٹ پر حملہ کرانا افسوسناک ہے نظام میں انصاف کے فقدان کے باعث بڑے زمیندار بچ جاتے ہیں جبکہ جمشید دستی جسے سفید پوش پر قانون کا علمدرآمد ہوجاتا ہے پنجاب حکومت نے اختیارات سے تجاوز کیا ہے ممبر قومی اسمبلی کی گرفتاری کیلئے پنجاب حکومت نے سپیکر سے اجازت لینا بھی گوارہ نہیں کیا۔شیخ رشید احمد کے ساتھ جو بھی پارلیمنٹ میں کیا گیا ہے وہ(ن)لیگ کی باقاعدہ منصوبہ بندی کے تحت کیا گیا ہے بھونڈی حرکت کی گئی ہے جسے عوامی سطح پر پسندیدگی کی نظر سے نہیں دیکھا جارہا ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ جمشید دستی کی رات کے اندھیرے ہی گرفتاری غیر اخلاقی ہے جبکہ14افراد کے قاتلوں کو ریلیف دے رکھا ہے۔اسمبلی نے بھی جانبداری رت کے پارلمنٹ کا وقار مجروح کیا ہے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر