طیارے سے ”ونگ “ کی آواز کیوں آتی ہے؟

طیارے سے ”ونگ “ کی آواز کیوں آتی ہے؟
طیارے سے ”ونگ “ کی آواز کیوں آتی ہے؟

  

لاہور (ویب ڈیسک) اگر آپ نے فضائی سفر کیا ہو تو آپ اس ’ڈنگ ‘ ساﺅنڈ یا آواز ضرورسنی ہوگی جو اس وقت آتی ہے جب سیٹ بیلٹ کا سائن بند ہوتا ہے اور یہ اس بات کا اشارہ ہوتا ہے کہ آپ اب کیبن میں گھومنے کے لیے آزاد ہیں ، مگر حساس کا نوں کے مالک افراد نے شاید کبھی توجہ دی ہو کہ یہ آواز پرواز کے دوران کئی بار سنائی دیتی ہے ، کئی بار یہ سنگل ڈنگ سیٹ بیلٹ کا سائن بند ہوتے بجتی ہے جبکہ کئی بار یہ پہلے تیز اور پھر ہلکی ٹون میں سنائی دیتی ہے اور کچھ وقت ایسا بھی ہوتا ہے کہ یہ آواز ’ڈنگ کی بجائے بوائنگ ‘ لگتی ہے ، مگر یہ کوئی بلاوجہ نکلنے والی آوازیں نہیں بلکہ یہ کسی طیارے کے عملے کے سیکریٹ کوڈ کا حصہ ہوتی ہیں، جیسے ایک فضائی کمپنی Qantas ائیرویزکے مطابق ہمارے ایئربس طیارے میں جب آپ کو ’بوائنگ‘ کی آواز ٹیک ٹیک آف کے ساتھ ہی سنائی دیتی ہے تو اس کے ذریعے عملے کو بتایا جاتا ہے کہ لینڈنگ گیئر واپس آرہے ہیں، جبکہ دوسری ’بوائنگ ‘ عام طور پر اس وقت ہوتی ہے جب سیٹ بیلٹ کا سائن سوئچ آف ہوتا ہے ، اسی طرح ایک سنگل ڈنگ عام طور پر اس وقت ہوتی ہے جب کوئی مسافر کسی سلسلے میں عملے کی مدد طلب کرتا ہے، یا طیارہ دس ہزار فٹ کی بلند ی پر پہنچ جاتا ہے جہاں الیکٹرونک ڈیوائسز کا استعمال محفوظ تصور کیا جاتا ہے ، جبکہ ڈنگ ڈونگ ساﺅنڈ کا مطلب یہ ہوتا ہے کہ پائلٹ اور فلائٹ اٹینڈنٹس ایک دوسرے کو کال کر رہے ہیں ، ویسے مختلف فضائی کمپنیوں میں اس کا مطلب الگ بھی ہو سکتا ہے تاہم یہ بات یقینی ہے کہ اس طرح کی آوازیں عملے کے خفیہ کوڈز کاحصہ ہے جس سے وہ ایک دوسرے تک مختلف معلومات کو منتقل کرتے ہیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس