جمشید دستی سے ملاقات نہ کرانے پر جاوید ہاشمی سنٹرل جیل کے سامنے احتجاجً کرسی رکھ کر بیٹھ گئے

جمشید دستی سے ملاقات نہ کرانے پر جاوید ہاشمی سنٹرل جیل کے سامنے احتجاجً کرسی ...
جمشید دستی سے ملاقات نہ کرانے پر جاوید ہاشمی سنٹرل جیل کے سامنے احتجاجً کرسی رکھ کر بیٹھ گئے

  

ملتان (ڈیلی پاکستان آن لائن )سینئر سیاستدان جاوید ہاشمی ملتان سنٹرل جیل میں رکن اسمبلی جمشید دستی سے ملنے گئے تو انہیں ملاقات سے روک دیا گیا جس پر بزرگ سیاستدان نے جیل کے دورازے کے آگے ہی کرسی پر بیٹھ کر احتجاج شروع کردیا ۔

تفصیل کے مطابق کار سرکار میں مداخلت پر گرفتار ہونے والے رکن اسمبلی جمشید دستی کو سینٹر ل جیل ملتان منتقل کردیا گیا جہاں بزر گ سیاستدان جاوید ہاشمی ان سے ملاقات کے لیے گئے لیکن جیل انتظامیہ نے جاوید ہاشمی کو ملاقات کی اجازت نہ دی جس پر انہوں نے جیل کے دورازے کے آگے کرسی رکھ کراحتجاج کیا ۔اس موقع پر جاوید ہاشمی نے کہا کہ جمشید دستی ایک منتخب نمائندہ ہے جسے جیل میں ڈال کر انتقامی کارروائی کی جا رہی ہے ۔انہوں نے کہا کہ پارلیمنٹ رکن اسمبلی کے ساتھ زیادتی کر رہی ہے ،میں جمشید دستی کے حقوق کی جنگ لڑنے آیا ہوں ۔بزر گ سیاستدان نے مزید کہا کہ اسپیکر قومی اسمبلی کی ذمے داری ہے جمشید دستی کر رہا کرائیں ۔

مزید : ملتان