’دانت برش کرتے وقت دانتوں پر برش نہ پھیریں بلکہ۔۔۔‘ آپ کے برش کرنے کا طریقہ آپ کے دانت تباہ کررہا ہے، دنیا کے معروف ترین ڈاکٹر ز کا درست طریقہ جانئے

’دانت برش کرتے وقت دانتوں پر برش نہ پھیریں بلکہ۔۔۔‘ آپ کے برش کرنے کا طریقہ ...
’دانت برش کرتے وقت دانتوں پر برش نہ پھیریں بلکہ۔۔۔‘ آپ کے برش کرنے کا طریقہ آپ کے دانت تباہ کررہا ہے، دنیا کے معروف ترین ڈاکٹر ز کا درست طریقہ جانئے

  

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) بچپن سے ہی ہمیں سکھایا جاتا ہے کہ دن میں دو باردانت برش کرنے چاہئیں، اور ہمیں دانت برش کرنے کا جو طریقہ بتایا گیا اب معلوم ہوا ہے کہ اس سے توہمارے دانت خراب ہو رہے ہیں، کیونکہ اب دنیا کے معروف ترین ڈاکٹرز نے درست طریقہ اس کے برعکس بتا دیا ہے۔ میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق ہم بچپن سے برش کو دانتوں پر پھیرتے آئے ہیں لیکن اب ڈاکٹروں نے بتایا ہے کہ ”برش کو دانتوں پر پھیرتا دانت صاف کرنے کا غلط طریقہ ہے جس سے دانت تباہ ہوتے ہیں۔ اس کے بجائے ہمیں برش مسوڑھوں پر پھیرنا چاہیے۔“

خراٹوں سے چھٹکارا حاصل کرنے کا سب سے آسان گھریلو نسخہ سامنے آگیا

ڈاکٹر مارک بورہین کا کہنا تھا کہ ”اکثر لوگوں کا برش ٹوائلٹ میں ہی رہتا ہے جو کہ غلط ہے۔ برش کو ٹوائلٹ سے دور رکھنا چاہیے کیونکہ ٹوائلٹ میں خطرناک بیکٹیریا ہوتے ہیں جو برش کو لگ کر ہمارے منہ میں چلے جاتے ہیں۔ اس کے علاوہ ہمیں ہمیشہ کھانا کھانے سے پہلے برش کرنا چاہیے اور دانتوں کی بجائے مسوڑوں کو نرمی کے ساتھ رگڑنا چاہیے اور ساتھ ہی زبان بھی صاف کرنی چاہیے۔ دو منٹ تک اس طریقے سے برش کرنے کے بعد فوراً پانی سے منہ نہیں دھونا چاہیے کیونکہ اس طرح ٹوتھ پیسٹ کو پورا کام کرنے کا موقع نہیں ملے گا۔ بہتر اثر کے لیے اسے چند منٹ تک دانتوں پر لگا رہنے دیں۔“

مزید : تعلیم و صحت