پاکستان میں دوکروڑ 10لاکھ بچے مزدوری کرنے پر مجبور

پاکستان میں دوکروڑ 10لاکھ بچے مزدوری کرنے پر مجبور

  

کوٹ ادو(تحصیل رپورٹر)پاکستان سمیت دنیابھر میں بچوں پرجبری مشقت کےخلاف محنت کش بچوں کا عالمی دن12جون کو منایا جائے گا،اس دن کے منانے کا مقصدمحنت کش بچوں کے مسائل کوحکومت و دیگر ذمہ داران تک موثر طریقے سے پہنچایا جا نا ہے، ایک رپورٹ کے مطابق پاکستان میں دو کروڑ 10لاکھ بچے مزدوری کرنے پر مجبور ہیں،پاکستان میں غربت،بے روزگاری و مہنگائی نے غریب بچوں کو اسکولوں سے اتنا دور کر دیا ہے کہ ان کے لیے تعلیم ایک خواب ہی بن کر رہ گئی ہے، یہ معصوم بچے بوٹ پالش (بقیہ نمبر14صفحہ12پر )

کے کام سے لے کر ہوٹلوں،چائے خانوں، ورکشاپوں، مارکیٹوں،چھوٹی فیکٹریوں،گاڑیوں کی کنڈیکٹری،بھٹہ خانوں،سی این جی اور پٹرول پمپوں پر گاڑیوں کے شیشے صاف کرنے سمیت دیگر بہت سے جبری مشقت کے کام کرتے ہیں۔

مشقت

مزید :

ملتان صفحہ آخر -