ویرات کوہلی نے تماشائیوں کو سٹیو سمتھ کیخلاف نعرے لگانے سے کیوں روکا؟ عمدہ کھلاڑی نے بات بھی شاندار کہہ دی

ویرات کوہلی نے تماشائیوں کو سٹیو سمتھ کیخلاف نعرے لگانے سے کیوں روکا؟ عمدہ ...
ویرات کوہلی نے تماشائیوں کو سٹیو سمتھ کیخلاف نعرے لگانے سے کیوں روکا؟ عمدہ کھلاڑی نے بات بھی شاندار کہہ دی

  

لندن (ڈیلی پاکستان آن لائن) بھارتی کرکٹ ٹیم کے کپتان ویرات کوہلی نے کہا ہے کہ بھارتی تماشائیوں کی جانب سے سٹیو سمتھ پر نعرے کسنا قابل قبول نہیں ہے، جو ہونا تھا وہ ہو چکا، سمتھ اپنی ٹیم کیلئے اچھا کھیلنے کی کوشش کر رہا ہے اور ایمانداری کی بات یہ ہے کہ کسی کو اتنا نیچا دکھانا بالکل بھی صحیح نہیں لگتا۔

تفصیلات کے مطابق آئی سی سی کرکٹ ورلڈکپ میں گزشتہ روز بھارت اور آسٹریلیا کے درمیان کھیلے گئے میچ کے دوران سٹیڈیم میں موجود تماشائیوں نے بال ٹمپرنگ پر سز بھگتنے والے سٹیو سمتھ اور ڈیوڈ وارنر کیخلاف نعرے بازی کی اور انہیں ’دھوکے باز‘ کہتے رہے۔ جس پر ویرات کوہلی نے تماشائیوں کو ہاتھ ہلا کر اپنی طرف متوجہ کیا اور ان کیخلاف نعرے لگانے کی بجائے ان کی حوصلہ افزائی کرنے کی تاکید کی اور اس لمحے کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہو گئی۔

کوہلی نے میچ کے بعد گفتگو کرتے ہوئے صحافیو ںکو بتایا کہ انہوں نے بھارتی تماشائیوں کی جانب سے ’دھوکے باز‘ کہنے جانے پر دونوں سے معافی مانگی ۔ ان کا کہنا تھا کہ میرے خیال سے جو ہو گیا سو ہو گیا، سمتھ اپنی ٹیم کیلئے اچھا کھیلنے کی کوشش کر رہا ہے اور کسی کو اتنا نیچا دکھانا بالکل بھی صحیح نہیں لگتا۔

بھارتی کپتان نے کہا کہ ماضی میں ہمارے کچھ مسائل تھے اور میدان میں کچھ بحث بھی ہوئی لیکن آپ یہ نہیں دیکھ سکتے کہ کوئی کھلاڑی جب بھی میدان میں اترے تو اسے ماضی کا احساس دلایا جائے، سمتھ واپسی کر رہا ہے، وہ سخت محنت کر رہا ہے اور اسی میں مگن ہے، یہاں بہت سے بھارتی تماشائی تھے اور میں نہیں چاہتا تھا کہ وہ کوئی بری مثال قائم کریں۔

ویرات کوہلی نے کہا کہ سمتھ نے ایسا کچھ نہیں کیا کہ اس پر نعرے کسے جائیں ، وہ تو صرف کرکٹ کھیل رہا تھا۔ اگر میں اس کی جگہ ہوتا اور کچھ ایسا کیا ہوتا جسے تسلیم کر کے معافی مانگ لیتا، کرکٹ میں واپس آتا اور پھر یہ سب کچھ ہوتا تو مجھے بھی یہ بالکل اچھا نہیں لگتا، میں نے تماشائیوں کی جانب سے معافی مانگی کیونکہ میرے خیال سے یہ سب کچھ قابل قبول نہیں تھا۔

مزید :

کھیل -