افغان حکومت نے مزید 716طالبان چھوڑ دیئے

    افغان حکومت نے مزید 716طالبان چھوڑ دیئے

  

کابل/ نیویارک(آن لائن) افغان نیشنل سکیورٹی کونسل کے ترجمان نے کہا ہے کہ جیلوں سے مزید716طالبان چھوڑ دئیے،جیلوں سے رہائی پانے والے طالبان کی تعداد3ہزار ہوگئی اور یہ سلسلہ بدستور جاری ہے۔تفصیلات کے مطابق ترجمان این ایس سی کا کہنا ہے کہاافغان امن کیلئے براہ راست مذاکرات کی طرف پیشرفت پر کاربند ہیں۔دوسری جانب افغان طالبان نے ایک مرتبہ پھر عالمی برادری کو واضح کرتے ہوئے کہا ہے کہ انٹرا افغان طالبان امن مذاکرات 5ہزار مقید طالبان کی رہائی سے مشروط ہیں۔ امریکہ کے ساتھ امن مذاکرات میں طالبان کی ٹیم کی سربراہی کرنے والے طالبان رہنما شیر محمد عباس استنکزئی نے امریکی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے بتایاکہ زلمے خلیل زاد کا خطے کے بار بار دورہ کرنے کا مقصد بین الافغان مذاکرات کے جلد آغاز کی کوشش ہے۔ طالبان کی اعلی قیادت کی جانب سے قیدیوں کے تبادلے کے دوران ہی بین الافغان مذاکرات کی اجازت اور افغان حکومت کے ساتھ امن مذاکرات جرمنی یا پھر ناروے میں ہونے کے سوال پر شیر عباس استنکزئی نے کہا کہ ابھی تک افغان حکومت کے ساتھ امن مذاکرات کے حوالے سے کسی حتمی تاریخ یا جگہ کے انتخاب پر بات چیت نہیں ہوئی ہے۔

طالبان

مزید :

صفحہ اول -