پولیس ایف آئی اے کا سینتھیار چی کیخلاف مقدمہ درج کرنے سے انکار

  پولیس ایف آئی اے کا سینتھیار چی کیخلاف مقدمہ درج کرنے سے انکار

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)اسلام آباد پولیس نے امریکی خاتون سنتھیا رچی کے خلاف مقدمہ درج کرنے سے انکار کردیا جب کہ ایف آئی اے نے بھی اندراج مقدمہ کے لیے دائر درخواست خارج کرنے کی استدعا کردی۔پیپلز پارٹی اسلام آباد کے صدر افتخار شہزادہ نے امریکی خاتون سنتھیا رچی کے خلاف مقدمے کے اندراج کے لیے رجوع کیا تھا۔ ذرائع کے مطابق اسلام آباد پولیس کے لیگل سیکشن کا کہنا ہے کہ سنتھیا رچی بظاہر تعزیرات پاکستان کے سیکشن 500 کے تحت بے نظیر بھٹو کی توہین کی مرتکب ہوئی۔لیگل سیکشن کے مطابق سنتھیا رچی کے خلاف کارروائی وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے) کے دائرہ کار میں آتی ہے۔دوسری جانب اسلام آباد کی مقامی عدالت میں امریکی شہری سنھتیا رچی کے خلاف اندراج مقدمہ کی درخواست پر سماعت ہوئی جس میں ایف آئی اے نے جواب جمع کرایا۔عدالت نے گزشتہ سماعت پر ایف آئی اے کو نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کیا تھا۔ایف آئی اے کے اسسٹنٹ ڈائریکٹرعدنان احمد خان لوہانی نے 2 صفحات پرمشتمل تحریری جواب جمع کرایا جس میں سنتھیا رچی کیخلاف مقدمہ اندراج کی درخواست خارج کرنے کی استدعا کی گئی۔ایف آئی اے نے مؤقف اپنایا کہ درخواست گزار نے مقدمہ اندراج کی درخواست دی تو انہیں وضاحت کی گئی کہ وہ متاثرہ فریق نہیں، قانون کے مطابق متاثرہ شخص یا اس کا سرپرست ہی یہ شکایت داخل کرسکتا ہے، درخواست گزار اس معاملے میں شکایت کنندہ بن کرمقدمہ درج کرانے کا حق نہیں رکھتے۔ایف آئی اے کے وکیل نے بتایا کہ عدالت کو یہ بھی دیکھنا ہو گا کہ کیا درخواست گزار براہ راست متاثرہ فریق ہیں، جس پر فاضل جج عطا ربانی نے ریمارکس دیئے کہ یہ دیکھنا آپ کا نہیں عدالت کا کام ہے، امریکی خاتون سنتھیا رچی کو بھی نوٹس کر کے آئندہ سماعت پر بلا لیتے ہیں۔عدالت نے پاکستان ٹیلی کمیونی کیشن اتھارٹی سے جواب طلب کرتے ہوئے سنتھیا ڈی رچی کو خود یا وکیل پیش کرنے کیلئے نوٹس جاری کر دیا، مقدمے کی مزید سماعت 13 جون کو ہوگی۔

سینتھیا رچی

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر) پیپلزپارٹی کے مرکزی رہنماء اور سابق وزیرداخلہ سینیٹررحمان ملک نے امریکی خاتون سنتھیارچی کو 50 ارب ہرجانے کا دوسرا نوٹس بھجوا دیا، دوسرا نوٹس ٹی وی پر بے بنیاد الزامات لگانے پر بھیجوایا گیا، امریکی خاتون کواس کے جھوٹ کے پلندے کیساتھ انصاف کے کٹہرے میں لاؤں گا۔ سینیٹ میں چیئرمین قائمہ کمیٹی برائے داخلہ رحمان ملک کے ترجمان نے بتایا کہ دوسرا نوٹس سنتھیارچی کو نجی چینلز پر رحمان ملک کیخلاف من گھڑت الزامات لگانے پرجاری کیا۔ سینیٹررحمان ملک نے کہا کہ سنتھیارچی کے لگائے گئے الزامات جھوٹ کا پلندہ ہیں،سختی سے تردید کرتا ہوں۔امریکی خاتون کواس کے جھوٹ کے پلندے کیساتھ انصاف کے کٹہرے میں لاؤں گا۔ اس سے قبل بھی رحمان ملک نے امریکی خاتون سنتھیا رچی کو50 کروڑ ہرجانے کا نوٹس بھجوایاتھا۔ انہوں نے کہا کہ سنتھیارچی سے کوئی ذاتی جھگڑا نہیں۔ بینظیر بھٹو شہید کیخلاف نازیبا الزامات پر بطور چیئرمین سینیٹ قائمہ کمیٹی داخلہ میں نے نوٹس لیا تھا۔ نوٹس کے ردعمل میں پر مجھ پر نازیبا، من گھڑت اور جھوٹے الزامات لگائے گئے۔ بطور کمیٹی چیئرمین سخت اقدامات لینے پر میری کردار کشی شروع کی گئی۔حکومت کیخلاف سخت بیانات پرمجھے قید اورقتل کرنے کی دھمکیاں بھی ملی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اوچھے ہتھکنڈوں سے ڈرنے والا نہیں۔ ماضی میں بھی موت کا سیل دیکھ چکا ہوں۔ دوسری جانب امریکی شہری سنتھیارچی نے عدالت میں جواب داخل کرانے کیلئے وکیل کرلیا ہے۔ ناصرعظیم خان ایڈووکیٹ نے کہا ہے کہ سنتھیارچی نے مجھے اپنا وکیل مقرر کیا ہے۔ 13جون کو ایڈیشنل سیشن جج کی عدالت میں سنتھیارچی کی طرف سے پیش ہوں گا۔ آئندہ سماعت پرعدالت میں پاورآف اٹارنی جمع کرایا جائیگا۔

دوسرا نوٹس

مزید :

صفحہ اول -