ایف بی آر نے درآمدی تمباکو اور سگریٹس پر بھاری ٹیکس عائد کرنے کی تجویز مسترد کردی

ایف بی آر نے درآمدی تمباکو اور سگریٹس پر بھاری ٹیکس عائد کرنے کی تجویز مسترد ...

  

اسلام آباد(آن لائن) ایف بی آر حکام نے بتایا ہے کہ تمباکو پر ایڈوانس فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی اگلے مالی سال تک 10 روپے ہی برقرار رہے گی۔ حکام نے ایڈوانس ایف آئی ڈی کو 10 روپے سے 500 روپے تک بڑھانے کی تجویز کو مسترد کردیا ہے۔ اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے ایف بی آر حکام پر زور دیا کہ وہ درآمدی تمباکو اور سگرئٹس پر بھاری ٹیکس عائد کرے اور ٹیکس چوری کی روک تھام کیلئے اقدامات کریں۔تفصیلات کے مطابق منگل کے روز سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کی زیرصدارت اجلاس میں کمیٹی کو بتایا گیا کہ ایف بی آر نے حکومت کے لئے مذید بالواسطہ محصولات پیدا کرنے کے لئے مکمل طور پر ایڈجسٹ ٹیکس کو 10 روپے سے بڑھا کر 500 روپے کرنے کی نجی شعبے کی تجویز پر تمام اسٹیک ہولڈرز سے مشاورت کی۔ تاہم، تمام حقائق، اور کسانوں پر ہونے والے ممکنہ منفی اثرات کو دیکھنے کے بعد، ایف بی آر نے فیصلہ کیا کہ تمباکو کے پتے پر ایڈوانس ایف آئی ڈی کے لئے موجودہ شرح برقراررہے گی۔ سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے کرونا وائرس کے دوران حکومت کی مالی اعانت کے لئے سگریٹ پر اضافی ٹیکس کی تجویز کی سفارش کی۔ انہوں نے تجویز دی کہ ایف بی آر کو سگریٹ اور درآمد شدہ تمباکو پر ٹیکس بڑھانا چاہئے۔ تمباکو کے کاشت کاروں نے کمیٹی کو بتایا کہ تمباکو کی فصل 35ہزارسے زائد گھرانوں کی روزی اور معاش کا ذریعہ ہے اور ٹیکس کی سابقہ پالیسیاں نے اس صنعت میں کم قیمتوں کے ذریعہ کاشتکاروں کے مفاد کو بری طرح سے متاثر کیا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ کاشتکاروں کی معاشرتی غربت پر اس کے اثرات پر غور کیے بغیر محض تعداد کے حامل پالیسیاں ان کی مایوس کن مالی حالت کو اور بڑھا سکتی ہیں۔

ٹیکس تجویز

مزید :

صفحہ آخر -