عوام اپنی اور دوسروں کی زندگی بچانے میں حکومت کی مدد کرے: وزیر اعلیٰ سندھ

عوام اپنی اور دوسروں کی زندگی بچانے میں حکومت کی مدد کرے: وزیر اعلیٰ سندھ

  

کراچی (این این آئی) سندھ میں کورونا کی وبا تیزی سے اپنے پنجے گاڑ رہی ہے اور گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کئے گئے ٹیسٹس میں سے 25 فیصد کا نتیجہ مثبت آیا ہے۔سندھ میں کورونا کی صورت حال سے متعلق اپنے بیان میں مراد علی شاہ نے کہا کہ گزشتہ 24 گھنٹوں میں 6995 ٹیسٹ کیے گئے، جس کے نتیجے میں 1745 نئے کیسز سامنے آئے، 1745 نئے کورونا کیسز کا آنا ٹیسٹوں کا 25 فیصد ہے، اب تک صوبے میں 2 لاکھ 46 ہزار 517 ٹیسٹ کیے گئے ہیں، جن میں 41 ہزار 303 کیسز آئے۔ آج مزید 759 مریض ٹھیک ہوکر گھروں کو چلے گئے، جس کے بعد صحت یاب ہونے والوں کی تعداد 19896 ہوگئی ہے،آج تک 20711 مریض زیرعلاج ہیں، جن میں سے 19 ہزار 201 اپنے گھروں، ایک ہزار 461 مختلف ہسپتالوں جب کہ 41 مختلف مراکز میں زیرعلاج ہیں۔وزیر اعلی سندھ نے کہا کہ گزشتہ24 گھنٹوں میں مزید 17 مریض انتقال کرگئے، جس کے بعد انتقال کرنے والوں کی تعداد 696 ہوگئی ہے، اس وقت 466 مریض تشویش ناک حالت میں ہیں، جن میں 71 مریض وینٹی لیٹرز پر ہیں۔ اس کے علاوہ سکھر 101، حیدرآباد 48، گھوٹکی میں 24، جیکب آباد اور دادو 15،15، جامشورو میں 14، شکارپور 13، خیرپور 12، کشمور میں 9، سجاول اور عمر کوٹ میں 6،6، قمبر 5 اور نوشہرو فیروز میں 3، میرپورخاص، ٹنڈو الہیار، ٹنڈو محمد خان اور ٹھٹھہ میں 2،2 اور سانگھڑ میں ایک کیس رپورٹ ہوا۔وزیراعلی سندھ نے کہا کہ کراچی،سکھر، حیدرآباد، بدین، گھوٹکی اور دیگر شہروں میں کیسز بڑھتے جا رہے ہیں، احتیاطی تدابیر نہ کرنے سے صورتحال خراب سے ابتر ہوتی جارہی ہے، خدارا ایس او پی پر عمل کریں اپنی اور دوسروں کی زندگی بچانے میں حکومت کی مدد کریں۔

مراد علی شاہ

اسلام آباد (این این آئی)وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے مشترکہ مفادات کونسل کا اجلاس بلانے اور این ایف سی کی تشکیل سے متعلق اپنی تشویش پر مبنی دو الگ الگ خطوط وزیراعظم عمران خان کو ارسال کردئیے۔وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے وزیراعظم عمران خان کو خط میں کہا کہ این ایف سی ایوارڈ کی تشکیل پر اعتراضات کے ساتھ لکھے گئے خط کا جواب ابھی تک نہیں آیا۔انہوں نے کہا کہ امید ہے کہ دسویں قومی مالیاتی کمیشن ایوارڈ کی تشکیل کا نوٹیفکیشن واپس لے لیا گیا ہوگا یا واپس لے لیاجائے گا۔مراد علی شاہ نے خط میں کہا کہ آئینی ذمہ داری ہے کہ حل طلب امور کے لیے مشترکہ مفادات کونسل کا اجلاس ہر 90 روز میں بلایاجائے، اس لیے سی سی آئی کا 42 واں اجلاس فوری طور پر بلایا جائے۔

وزیراعلیٰ سندھ

مزید :

صفحہ آخر -