نوشہرہ‘ بااثر شخص کی اراضی پر قبضہ‘ شہری کی مزاحمت

نوشہرہ‘ بااثر شخص کی اراضی پر قبضہ‘ شہری کی مزاحمت

  

نوشہرہ (بیورورپورٹ) بااثر سیاسی و سرکاری شخصیات کے نام لیکر بلیک میلنگ کرنے والے پشاور نیشنل بینک ملازم کا نوشہرہ کے نواحی علاقہ ڈاگئی میں شہری کی زمین پر قبضہ کرنے کی کوشش شہری کی مزاحمت پر بینک ملازم آپے سے باہر اپنے گن مینوں کے ہمراہ زمین مالک کو بد ترین تشددکا نشانہ بنا ڈالا متاثرہ شہری رپورٹ درج کرنے تھانہ اضاخیل گیا تو مثالی پولیس نے متاثرہ شہری کی داد رسی کی بجائے ان کو حوالات میں بند کرکے خوب درگت بنا ڈالی متاثرہ شہری کااعلیٰ حکام سے انصاف کی اپیل اور پشاور نیشنل بینک ملازم کے خلاف کاروائی کا مطالبی اس سلسلے میں نوشہرہ کے علاقہ وزیر گڑھی کے رہائشی اور نجی ہاوسنگ سکیم کے ملازم ضابط خان ولد گمبت خان نے نوشہرہ پریس کلب میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے بتایا کہ میں خود ایک نجی ہاوسنگ سکیم میں ملازم ہوں اور ڈاگئی میں میری ملکیتی اراضی پر پشاور نیشنل بینک کا ملازم وقار جو خود کو سابق نگران وزیر اعلیٰ شمس الملک، وزیر دفاع پرویز خان خٹک اور سابق آئی جی پی فیاض احمد طور کا قریبی رشتہ دار ظاہر کر رہا ہے اور ان ہی شخصیات کے نام پر سرکاری و نجی اداروں میں بلیک میلنگ کرتا رہتا ہے گذشتہ روز یہی بینک ملازم وقار نے میری مکیتی اراضی پر قبضہ کرنے کی کوشش کی جس پر میں نے مزاحمت کی اور میری مزاحمت پر وقار آپے سے باہر ہو گیا اور اپنے گن مینوں سمیت مجھ پر بدترین تشدد کیا میں نے مذکورہ واقع کے خلاف اور اپی داد رسی کیلئے تھانہ اضاخیل میں رپورٹ درج کی لیکن مثالی پولیس نے میری داد رسی کی بجائے الٹا مجھے حوالات میں بند کرکے میری خوب درگت بنا ڈالی اور انہوں نے بھی مجھے خوب مارا پیٹا انہوں نے مزید کہا کہ میں خیبر پختونخواہ کے اعلیٰ پولیس حکام سے مطالبہ کیا کہ وہ مجھے انصاف فراہم کرکے پشاور نیشنل بینک ملازم وقار اور ان کے گن مینوں کو گرفتار کرکے قرار واقع سزا دیں اور مجھے انصاف فراہم کریں۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -