حکومت پرا ئیو یٹ سکولوں کے اساتذہ کو تنخوا ہیں، کرایہ، یوٹیلیٹی بلز ادا کرے: سراج الحق

حکومت پرا ئیو یٹ سکولوں کے اساتذہ کو تنخوا ہیں، کرایہ، یوٹیلیٹی بلز ادا کرے: ...

  

کوئٹہ (آن لائن)امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق نے کہاہے کہ اساتذہ قوم کے معمار اور محسن ہیں حکومت نجی اداروں کے اساتذہ کے ساتھ سوتیلی ماں کا سلوک بند کرے۔کورونا وباء کے بعددنیا کے بہت سے ملکوں میں تعلیمی ادارے کھل گئے ہیں۔ہماری حکومت نے باز ار،پبلک ٹرانسپورٹ،بڑے بڑے پلازے اورریسٹوران کھول دیئے ہیں مگر تعلیمی ادارے جن سے قوم کا مستقبل وابستہ ہے ان کو جبراً بند رکھا جارہا ہے۔تعلیمی اداروں کی بندش سے 15 لاکھ اساتذہ بے روز گار ہوچکے ہیں اور انتہائی کسمپرسی میں زندگی گزار رہے ہیں۔کورونا فنڈ کے 12سو ارب روپے سے ان کی مدد کیوں نہیں کی جاسکتی۔پرائیویٹ تعلیمی اداروں کو حکومت اپنا دشمن کیوں سمجھ رہی ہے، یہ حکومت کے معاون ہیں۔آرٹیکل 25.A کے تحت ملک کے ہر شہری کو زیور تعلیم سے آراستہ کرنا ریاست کا کام ہے، اگر پرائیویٹ تعلیمی ادارے یہ کام کر رہے ہیں تو وہ دراصل حکومت کی ذمہ داری میں اپنا حصہ ڈال رہے ہیں۔حکومت کو چاہیے کہ ان اداروں کو ہنگامی بنیادوں پر سپورٹ کرے تاکہ علم کی شمع روشن رہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے بلوچستان،خیبرپختونخواہ،سندھ،پنجاب،گلگت بلتستان اورآزادکشمیر کے پرائیویٹ اسکولزایسوسی ایشن کے نمائندوں سے ملاقات کے دوران گفتگومیں کیا۔انہوں نے کہا کہ ملک بھر میں 27فروری سے تعلیمی ادارے بند ہیں چار ماہ بعد بھی حکومت کے پاس تعلیمی نظام کو بحال کرنے کا کوئی لائحہ عمل نہیں۔پرائیویٹ تعلیمی اداروں میں پڑھنے والے اڑھائی کروڑ اور مدارس کے 31لاکھ طلبا کا مستقبل تاریک ہورہا ہے۔ سراج الحق نے مطالبہ کیا کہ حکومت بند کئے گئے تعلیمی اداروں کا بوجھ خود اٹھائے،اساتذہ کو تنخواہیں،بلڈنگز کا کرایہ اور یوٹیلیٹی بلز حکومت ادا کرے کیونکہ چار ماہ سے بچوں کی فیسیں تو نہیں آرہیں،حکومت ان اداروں کو چلانے کیلئے بلاسود قرضے مہیا کرے۔15لاکھ اساتذہ کے گھروں کے چولہے بجھ گئے ہیں اور یہ اساتذہ عید پر بھی اپنے بچوں کو نئے کپڑے اور جوتے تو کیا اچھا کھانا نہیں کھلا سکے۔ ملک بھر کے نجی تعلیمی اداروں کے ذمہ داران نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ SOP اور حفاظتی تدابیر کے ساتھ تعلیمی ادارے کھولنے کا اعلان کریں۔پچھلے چار مہینوں سے سکول بند ہیں اور کرونا اور لاک ڈاؤن کی وجہ سے والدین فیس دینے کی استطاعت نہیں رکھتے۔ اس لیے حکومت پاکستان نجی تعلیمی اداروں کے لیے ریلیف پیکج کا اعلان کرے اور نجی تعلیمی اداروں کے حوالے سے منفی پروپیگنڈہ بند کیا جائے۔

سراج الحق

مزید :

پشاورصفحہ آخر -