تیر ہ ماہ میں ایک کروڑ روپے کمانیوالی خاتون ٹیچر دراصل بے روزگار نکلی ، تحقیقات میں نیا موڑ آگیا

تیر ہ ماہ میں ایک کروڑ روپے کمانیوالی خاتون ٹیچر دراصل بے روزگار نکلی ، ...
تیر ہ ماہ میں ایک کروڑ روپے کمانیوالی خاتون ٹیچر دراصل بے روزگار نکلی ، تحقیقات میں نیا موڑ آگیا

  

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) گزشتہ دنوں بھارت میں انامیکا شکلا نامی ایک خاتون ٹیچر کے بیک وقت 25سکولوں میں ملازمت کرنے اور تنخواہوں کی مد میں 13ماہ کے دوران 1کروڑ بھارتی روپے (تقریباً 2کروڑ 17لاکھ پاکستانی روپے) وصول کرنے کے انکشاف نے تہلکہ مچا دیا تھا، تفصیلات کیلئے یہاں کلک کریں۔ اب اس کیس کی تحقیقات میں انکشاف ہوا ہے کہ انامیکا شکلا نامی یہ لڑکی حقیقت میں بے روزگار ہے۔ ٹائمز آف انڈیا کے مطابق انامیکا شکلا کے نام پر بوگس ملازمتیں ظاہر کی گئیں اور تنخواہیں حاصل کی گئیں۔ یہ کارنامہ کس نے سرانجام دیا، اب اس کی تلاش جاری ہے۔

تحقیقات میں معلوم ہوا ہے کہ انامیکا شکلا بھارتی ریاست اترپردیش کے ضلع گونڈا کی رہائشی ہے جو بے روزگار ہے۔ جب اس کے متعلق یہ تہلکہ خیز انکشاف سامنے آیا تو خود وہ بھی ہکا بکا رہ گئی اور اس نے اپنی تعلیمی اسناد اور شناخت کا غلط استعمال ہونے کے خلاف مقدمہ درج کروا دیا۔ انامیکا شکلا کا کہنا تھا کہ ”میں نے 2017ءمیں پانچ اضلاع سلطان پور، جون پور، لکھنو¿، بستی اور مرزا پور کے سکولوں میں سائنس ٹیچر کی نوکری کے لیے درخواستیں دی تھیں، لیکن مجھے کہیں بھی ملازمت کے لیے منتخب نہیں کیا گیا۔ میں نے ان لوگوں سے اپنے کاغذات واپس نہیں لیے تھے، جن کا انہوں نے غلط استعمال کیا اور 25مختلف سکولوں میں میری سائنس ٹیچر کی ملازمت ظاہر کرکے تنخواہیں لیتے رہے۔ دوسری طرف میں آج بھی بے روزگار ہوں۔“رپورٹ کے مطابق انامیکا شکلا نے پولیس کو دی گئی اپنی رپورٹ میں مختلف سکولوں کے کئی لوگوں کو نامزد کیا ہے جہاں اس نے ملازمت کے لیے اپلائی کیا تھا۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -بین الاقوامی -