نئی جامعات کے اساتذہ ہائیر ایجوکیشن میں رپورٹ کرنیکے احکامات پر پریشان 

نئی جامعات کے اساتذہ ہائیر ایجوکیشن میں رپورٹ کرنیکے احکامات پر پریشان 

  

   لاہور (لیڈی رپورٹر)لاہور کالج یونیورسٹی میں خدمات انجام دینے والی اساتذہ نے مطالبہ کیا ہے کہ ہائر ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ کا نو ٹیفکیشن ہرا سمنٹ ہے، فوری واپس لیا جائے، جب یہ طے تھا کہ ملازمین 30 جون تک یونیورسٹی کے ملازم ہی تصور ہوں گے تو پھر5 جون سے اساتذہ کو ان کے فرائض منصبی کے دوران سیکریٹ اور ہال روڈ کیو ں بلا یا جا رہا ہے۔واضح رہے کہ ہائر ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ نے19سال بعد پنجاب میں کالج سے یونیورسٹی بننے والی نئی جامعات میں تعینات تمام اساتذہ کو محکمہ میں واپس بلا لیاہے، اس ضمن میں ایچ ای ڈی کی طرف سے صوبے میں کالج سے یونیورسٹی بننے والی گیارہ جامعات کو باقاعدہ مراسلہ جاری کردیا گیا تھا،۔ذرائع کے مطابق محکمہ ہائر ایجوکیشن کی طرف سے کالج کیڈر میں جی سی یونیورسٹی لاہور سے 9، جی سی یونیورسٹی فیصل آباد سے 21، یونیورسٹی آف ایجوکیشن لاہور سے 15، ویمن یونیورسٹی فیصل آباد سے 105، سرگودھا یونیورسٹی سے 41، ویمن یونیورسٹی ملتان سے 56، ویمن یونیورسٹی سیالکوٹ سے 38، صادق ویمن یونیورسٹی بہاولپور سے 36، لاہور کالج فار ویمن یونیورسٹی سے115، غازی یونیورسٹی ڈی جی خان سے56 اور گجرات یونیورسٹی سے 5 اساتذہ کو محکمہ میں واپس بلایا گیا ہے۔ روزنا مہ پا کستا ن سے گفتگو کر تے ہو ئے اساتذہ کا کہنا تھا کہ جب ہمیں تیس جو ن کو واپس بلا نے کا کہا گیا تھا تو اب پھر کس با ت کی جلدی ہے ہمیں کیو ں گر می میں دربدر کیا جا رہا ہے۔ سپیشل سیکرٹری ہائر ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ نعیم غوث نے”پا کستا ن“ کو  بتایا کہ، یونیورسٹیز سے ایچ ای ڈی میں 30جون تک اساتذہ کو واپس بلانے کے احکامات دئیے گئے ہیں، اساتذہ کی سہولت کیلئے ان کو اسی شہر میں تعینات کیا جائے گا جس شہر میں متعلقہ یونیورسٹی واقع ہے۔

 اگرکوئی یونیورسٹی اساتذہ کو رکھنا چاہے توسیلری بجٹ کی ذمہ داری متعلقہ یونیورسٹی پرہی ہوگی۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -