میٹرو بسوں میں ایس او پیز کی خلاف ورزیاں، کورونا پھیلنے کا خدشہ

  میٹرو بسوں میں ایس او پیز کی خلاف ورزیاں، کورونا پھیلنے کا خدشہ

  

    لاہور(انور کھرل) صوبائی دارالحکومت میں کورونا کا زور کم ہوتے ہی سرکاری ٹرانسپورٹ میٹرو بس سروس میں ایس او پیز کو ختم کر دیا گیا، مسافر تعداد سے زیادہ او ر ماسک کے بغیر سفر کرنے لگے۔تفصیلات کے مطابق لاہور شہر کے باسیوں کے لئے سستی میٹرو بس میں داخل ہونے کے لئے دروازہ نمبر 2اور 3کا ستعمال کیا جا رہا ہے جہاں دروازہ نمبر دو سے خواتین اور تین سے مرد حضرات داخلے کے پابند ہیں۔مسافروں کو ان دروازوں کے استعمال کو یقینی بنانے اور 80مسافروں سے زیادہ نہ بٹھانے کے احکامات ہیں لیکن حقیقت میں بس میں سوار ہونے والے مسافروں کی تعداد 150 سے بھی زیادہ ہوتی ہے جن میں سے زیادہ تر نے ماسک بھی نہیں پہنا ہوتا۔ سیکیورٹی پر مامور اہلکار اس دوران اپنی ڈیوٹی سر انجام دینے سے مکمل طور پر عاری نظر آئے اور خوش گپیوں میں مصروف رہتے ہیں۔اس حوالے سے میٹرو بس کے چیف سیکیورٹی آفیسر رانا صفدر اور شفٹ انچارج سعید احمد کاکہنا ہے کہ ہر اسٹیشن پر داخلے کے دوران ماسک ضرور چیک کئے جاتے ہیں بغیر ماسک افراد کو داخل نہیں ہونے دیا جاتا، مسافر جب بس میں سوارہوجاتے ہیں ماسک اتار لیتے ہیں جس پر اب بسوں کے اندر بھی سیکیورٹی اہلکار تعینات کر دئیے ہیں تاکہ ایس او پیز پر سختی سے عملدرآمد کروایا جا سکے۔ سیکیورٹی شف انچارج سعید احمد کاکہنا ہے کہ میٹرو بس کے ماسک کا سختی سے پہننے کے لئے کہا جائے تو مسافر گٹھ جوڑ کر لیتے ہیں سیکیورٹی اہلکار کو برا بھلا کہنے سمیت تشدد پر بھی اتر آتے ہیں اس لئے سیکیورٹی اہلکار خوف میں مبتلا ہیں۔ اس میں شہریوں کو بھی میٹر بس کی انتظامیہ اور ملازمین کے ساتھ مکمل تعاون کرنا چاہیے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -