بحریہ ٹاؤن پر تشدد بند کیا جائے، انویسٹرز، بلڈرز اور ڈیلرز کا مطالبہ 

بحریہ ٹاؤن پر تشدد بند کیا جائے، انویسٹرز، بلڈرز اور ڈیلرز کا مطالبہ 

  

راولپنڈی(خصوصی رپورٹ)ملک کے ہزاروں رئیل اسٹیٹ انسویسٹرز، بلڈرز اور ورکرز نے مطالبہ کیا ہے کہ بحریہ ٹاؤن کراچی پراتوار کوحملہ آور ہونے والے قبضہ مافیا کے افراد کے خلاف فوری کارروائی کی جائے تا کہ آئندہ ایسے واقعات اور اس سے جنم لینے والے محرکات کا سدِباب ہو سکے۔ میڈیا سے گفتگوکرتے ہوئے انہوں نے بحریہ ٹاؤن کراچی میں ہونے والے واقعہ کوکھلی دہشت گردی قرار دیا جو کہ اتوار 6جون 2021ء کو پیش آیا تھا۔گزشتہ روز میڈیا سے بات کرتے ہوئے انویسٹرز نے یاددہانی کروائی کہ ملکی معیشت سخت حالات سے دوچار ہے۔ ایسے سخت حالات میں یہ بحریہ ٹاؤن ہی تھا جو بیرون ملک سرمایہ کاروں کی حوصلہ افزائی کرتا رہا ہے۔ گزشتہ سال حکومت پاکستان نے پراپرٹی انویسٹمنٹ پر ایک ٹیکس ایمنسٹی سکیم کا آغاز کیا تھا اور ملک میں سرمایہ کاری کے لیے ان کوششوں میں بحریہ ٹاؤن پیش پیش رہا جس کا نتیجہ یہ ہے کہ آج الحمد اللہ ملکی معیشت دوبارہ بحالی کی جانب گامزن ہے۔ ایسے میں بحریہ ٹاؤن پر حملہ معیشت کے لیے ایک شدید دھچکے سے کم نہیں اور ایسا کرنے والوں کے خلاف فوری کارروائی ہی سرمایہ کاروں کا اعتماد بحال رکھ سکتی ہے۔بحریہ ٹاؤن رنگ و نسل اور صوبائیت کی تفریق کیے بغیر ہر پاکستانی کی خدمت کررہاہے اور اس کی کوشش ہے کہ پاکستان کے ہرصوبے کی عوام کو جدید لائف سٹائل کے ساتھ ساتھ معاشی ترقی اور روزگار کے مواقع ملتے رہیں جو ایک پر امن اور خوشحال پاکستان کی تعمیرکی طرف واحد راستہ ہے اور بحریہ ٹاؤن یا دیگر قومی کاروباری اداروں پر حملے اس میں رکاوٹ ثابت ہو سکتی ہے۔لہٰذا حکومت پاکستان اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کو ایسے افراد اور گروہوں کے خلاف سخت قانونی کارروائی کرنی چاہئے اور ان کے ملک دشمن عزائم کو خاک میں ملانا چاہئے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -