1970 میں صرف 30 ارب ،عمران خان کے دور میں 13 ہزار ارب اضافے سے 38 ہزار ارب ، کس دور میں پاکستان کے قرض میں کتنا اضافہ ہوا؟ مکمل تفصیلات سامنے آگئیں

1970 میں صرف 30 ارب ،عمران خان کے دور میں 13 ہزار ارب اضافے سے 38 ہزار ارب ، کس دور ...
1970 میں صرف 30 ارب ،عمران خان کے دور میں 13 ہزار ارب اضافے سے 38 ہزار ارب ، کس دور میں پاکستان کے قرض میں کتنا اضافہ ہوا؟ مکمل تفصیلات سامنے آگئیں
سورس:   Instagram

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان کی اقتصادی سروے رپورٹ جاری کردی گئی ہے جس کے مطابق ملکی قرضے مجموعی طور پر 38 ٹریلین یعنی 38 ہزار ارب روپے تک پہنچ گئے ہیں۔ وزیراعظم عمران خان نے 2018  میں اقتدار سنبھالا تو ملک کا مجموعی قرض 24.9 ٹریلین روپے تھا جو اگلے سال تقریباً آٹھ ٹریلین کے اضافے کے ساتھ 32.7 ٹریلین روپے تک پہنچ گیا۔ سنہ  2020 میں مجموعی قرض 36.4  ٹریلین تک جا پہنچا اور رواں  سال مارچ تک ملک کے قرضوں کا مجموعی حجم  38 ٹریلین  روپے تک پہنچ چکا تھا۔ عمران خان کے دور حکومت میں مجموعی طور پر قرضوں میں 13 ٹریلین روپے کا اضافہ ہوچکا ہے جو کہ اب تک کے تمام ادوار سے زیادہ ہے۔

اقتصادی سروے رپورٹ میں 1971 سے اب تک کے تمام ادوارِ حکومت کے قرضوں کی تفصیل جاری کی گئی ہے۔ سنہ 1970 تک پاکستان پر قرضوں کا مجموعی بوجھ صرف 30 ارب روپے تھا جس کے بعد ہر دور میں ان میں بے پناہ اضافہ ہوتا چلا گیا۔ ذیل میں دیے گئے ٹیبل میں آپ  ان قرضوں کی تفصیل  جان سکتے ہیں۔

سنہ ء دور حکومت کا اختتام مجموعی قرضہ اضافہ
1977 ذوالفقار علی بھٹو (پی پی پہلا دور) 97 ارب روپے 67ارب روپے
1988 جنرل ضیاء الحق 523 ارب روپے 426 ارب روپے
1990 بینظیر بھٹو (پہلا ،پی پی دوسرا دور) 711 ارب روپے 188 ارب روپے
1993 نواز شریف (پہلا دور)

1135 ارب روپے (ایک ٹریلین)

422 ارب روپے
1996 بینظیر بھٹو (دوسرا ، پی پی تیسرا دور) 1704 ارب روپے (1.7ٹریلین) 569 ارب روپے
1999 نواز شریف (دوسرا دور) 2946 ارب (تقریباً 3 ٹریلین) 1242 ارب (ایک ٹریلین سے زائد)
2008 جنرل پرویز مشرف 6127 ارب (6 ٹریلین سے زائد) 3181 ارب (3 ٹریلین سے زائد)
2013 آصف علی زرداری (پی پی چوتھا دور) 14200 ارب (14.2 ٹریلین) 8000 ارب (8 ٹریلین)
2018 نواز شریف (تیسرا دور) 24900 ارب (24.9 ٹریلین) 10 ہزار ارب (10 ٹریلین)
اگست 2018 سے تاحال عمران خان (جاری) 38 ہزار ارب (38 ٹریلین) 13 ہزار ارب (13 ٹریلین سے زائد)

مزید :

اہم خبریں -قومی -بجٹ -