الیکشن کمیشن نے اسلام آباد کے 3 حلقوں کے کیسز دوسرے ٹربیونل کو منتقل کردیئے

الیکشن کمیشن نے اسلام آباد کے 3 حلقوں کے کیسز دوسرے ٹربیونل کو منتقل کردیئے
الیکشن کمیشن نے اسلام آباد کے 3 حلقوں کے کیسز دوسرے ٹربیونل کو منتقل کردیئے

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن )الیکشن کمیشن نے مسلم لیگ (ن) کے ارکان قومی اسمبلی کی درخواستوں پر محفوظ فیصلہ سنادیا،الیکشن کمیشن (ای سی پی) نے اسلام آباد کے 3 حلقوں کے کیسز دوسرے ٹربیونل کو منتقل کردیئے اور تینوں حلقوں سے منتخب ہونے والے اراکین قومی اسمبلی کی جیت کے خلاف شکایات دوسرے ٹربیونلز کو بھیجنے کی درخواستیں منظور کرلیں۔
چیف الیکشن کمشنر سکندر سلطان راجہ کی سربراہی میں 4 رکنی کمیشن نے مسلم لیگ (ن) کے ارکان قومی اسمبلی انجم عقیل، طارق فضل اور خرم نواز کی درخواست پر فیصلہ سناتے ہوئے تینوں حلقوں سے متعلق درخواستیں دوسرے ٹربیونلز منتقل کرنے کی ہدایت کر دی۔الیکشن کمیشن نے پی ٹی آئی رہنماو¿ں کی کیس دوسرے ٹربیونل کو منتقل نہ کرنے کی استدعا مسترد کردی۔یاد رہے کہ لیگی رہنماؤں نے الیکشن ٹربیونل پر عدم اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے معاملہ دوسرے ٹربیونلز کو بھیجنے کی درخواست دائر کی تھی، چیف الیکشن کمشنر سکندر سلطان راجہ کی سربراہی میں 4 رکنی کمیشن نے ٹربیونل کو تبدیل کرنے کی درخواستوں کی سماعت کی تھی۔
پی ٹی آئی کے حمایت یافتہ شعیب شاہین، عامرمغل اورعلی بخاری کے وکلاء نے  لیگی رہنماؤں کی درخواستیں مسترد کرنے کی استدعا کی تھی۔گزشتہ سماعت میں فیصل چودھری نے کہا تھا کہ الیکشن کمیشن کے پاس ٹربیونل تبدیلی یا نظرثانی کا اختیار نہیں۔

واضح رہے کہ چند روز قبل الیکشن کمیشن نے مسلم لیگ( ن) کے رہنماؤں کی درخواستوں پر فیصلہ محفوظ کیا تھا۔