بڑے بینکوں کے غیرفعال قرضے25ارب روپے رہ گئے

بڑے بینکوں کے غیرفعال قرضے25ارب روپے رہ گئے

لاہور(کامرس رپورٹر)ملک کے پانچ بڑے بینکوں نیشنل بنک،حبیب بنک،ایم سی بی بنک،الائیڈ بنک اور پنجاب بنک کے مالی سال 2014ء میں پھنسے ہوئے قرضے 40ارب روپے سے کم ہو کر 25ارب روپے رہ گئے ۔نیشنل بنک کے پھنسے ہوئے قرضے 17ارب روپے سے کم ہو کر 13ارب روپے جبکہ پنجاب بنک نے اپنے پھنسے ہوئے قرضوں میں سے مزید ایک ارب روپے وصول کر لئے۔ایک خصوصی رپورٹ کے مطابق پنجاب بنک کی گزشتہ 9ماہ میں فی حصص آمدنی 1.60روپے رہی جبکہ سال 2014ء کی فی حصص آمدنی 2.50روپے اور منافع 5ارب روپے متوقع ہے جبکہ شیئرز ہولڈرز کو 10فیصد بونس دیئے جانے کا امکان ہے ۔رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ پانچ بڑے کمرشل بینکوں کی جانب سے مالی سال 2013ء میں 133ارب روپے جبکہ مالی سال 2014میں 233ارب روپے کے کل قرضے دیئے گئے۔

اس طرح گزشتہ سال کے مقابلے میں مالی سال 2014ء میں بینکوں کے قرضوں میں 100ارب روپے کا اضافہ ہوا ہے۔اسی طرح پانچوں کمرشل بینکوں کا 2013ء میں خالص منافع 112ارب روپے تھا جو مالی سال 2014ء میں بڑھ کر 163ارب روپے ہو گیا ۔اسی طرح ان بینکوں کی 2013ء میں سودی آمدنی 193ارب روپے تھی جو 2014ء میں بڑھ کر 233ارب روپے ہو گئی۔رپورٹ میں بتایا گیا پانچوں بڑے کمرشل بینکوں کی مالی سال 2013ء کے مقابلے میں 2014ء میں آمدنی،اثاثوں اور منافع میں مجموعی طور پر 35فیصد اضافہ ہوا اور ان بینکوں کی گروتھ بھی 23.3فیصد بڑھی۔

مزید : کامرس


loading...