قائداعظم ٹاؤن سوک سنٹر پر غیر قانونی کچی آبادی واگزار نہ کروائی جا سکی

قائداعظم ٹاؤن سوک سنٹر پر غیر قانونی کچی آبادی واگزار نہ کروائی جا سکی

 لاہور(ایم آئی بھٹی )ایل ڈی اے 20سال گزرنے کے باوجود بھی قائداعظم ٹاؤن کے سوک سنٹر پر غیر قانونی طور پر بنائی گئی کچی آبادی کو نہ گرا سکا۔ قائد اعظم ٹاؤن کے سوک سنٹر پر کچی آبادی جبکہ رہائشی پلاٹوں پر غیر قانونی طور پر کمرشل مارکیٹیں بنا دیں ۔جس پر ایل ڈی اے ٹاؤن شپ میں لاقانویت کو ختم نہ کر سکا بلکہ قبضہ مافیا کے آگے گھٹنے ٹیک لیے جس پر قائد اعظم ٹاؤن میں لوگوں نے ایل ڈی اے پالیسی کو ہوا میں اڑاتے ہوئے اپنی مرضی کی تعمیرات کر لیں۔تفصیلات کیمطابق 1994میں ہاؤسنگ سے ایل ڈی اے کنٹرول ایریا میں آنے والے قائد اعظم ٹاؤن(ٹاؤن شپ)سکیم میں لاہور ڈویلپمنٹ اتھارٹی محکمانہ پالیسی لاگو کرنے میں ناکام ہو گیا ۔قائد اعظم ٹاؤن میں سوک سنٹر جس میں 100فٹ اور200فٹ کی کشادہ سڑکیں موجو د ہیں ۔جس پرقبضہ مافیانے کچی آبادی تعمیر کر رکھی ہے جو کہ انتہائی قیمتی جگہ ہے۔جس پر چار چار کنا ل کے کمرشل اور انڈسٹریل پلاٹ ہیں ۔اس کے علاوہ پبلک بلڈنگ سائٹس بھی ہیں ۔جو کہ تمام سہولیات سے مزین ہے لیکن ایل ڈی اے کی غفلت کیوجہ محکمے کو اربوں کا نقصان ہونے کے ساتھ ساتھ خوبصورت سوسائٹی کشادگی کی بجائے تنگ ہو چکی ہیں۔اس کے علاوہ قائد اعظم ٹاؤن(ٹاؤن شپ)میں تین مرلے سے لیکر 10مرلہ کے رہائشی پلاٹوں پر غیر قانونی مارکیٹیں بنا دی گئی ہے جس کی تعمیرات روکنے میں ایل ڈے اے ناکا م رہا ہے ۔مارکیٹوں میں رش کیوجہ سے لوگوں کو پیدل چلنا بھی محال ہو گیا ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...