ہائیکورٹ کاقتل کے مجرم کی سزائے موت کوعمرقید میں تبدیل کرنے کا حکم

ہائیکورٹ کاقتل کے مجرم کی سزائے موت کوعمرقید میں تبدیل کرنے کا حکم

 لاہور(نامہ نگار خصوصی)لاہورہائیکورٹ کے دورکنی بنچ نے سزائے موت کے قیدی محمد عنایت کی سزائے موت کوعمرقید میں تبدیل کرنے کا حکم دے دیا۔جسٹس سید مظاہرعلی اکبرنقوی اورجسٹس سید شہبازعلی رضوی پرمشتمل دورکنی بنچ نے سزائے موت کے قیدی محمد عنایت کی بریت کے لئے دائراپیل کی سماعت کی۔ وکیل صفائی نے موقف اختیارکیا کہ منڈی بہاولدین پولیس نے نذیراں بی بی کے قتل کے جرم میں ملزم کے خلاف مقدمہ درج کیا۔ وقوعہ سے 50کلومیٹر دوررہنے والے چشم دید گواہ اور مدعیہ کی وقوعہ پر موجودگی ثابت نہیں ہوتی۔ٹرائل کورٹ نے غیر فطری شہادتوں اورناکافی ثبوتوں کے باوجود ملزم کو سزائے موت کا حکم سنایا۔ وکیل صفائی نے سزائے موت کے قیدی کو بری کرنے کا حکم دینے کی استدعا کی۔ڈپٹی پراسیکیوٹرجنرل پنجاب میاں اویس مظہر نے کہا کہ بروقت مقدمہ درج اورپوسٹمارٹم ہوا، ملزم پولیس تفتیش ، فرانزنک سائنس لیبارٹری رپورٹ اورشناخت پریڈ میں قصوروارپایاگیاہے۔ عدالت نے وکلاء کے دلائل سننے کے بعد بریت اپیل مسترد کردی تاہم اس کی سزائے موت کو عمرقید میں تبدیل کرنے کاحکم دے دیا۔ عمر قید

مزید : صفحہ آخر


loading...