قتل کے 4مجرموں کی بریت کی اپیلیں مسترد ،سزائے موت عمرقید میں تبدیل

قتل کے 4مجرموں کی بریت کی اپیلیں مسترد ،سزائے موت عمرقید میں تبدیل

 لاہور(نامہ نگار خصوصی)لاہورہائیکورٹ نے کرکٹ میچ کے دوران جھگڑنے پر 4افراد کے قتل کے جرم میں سزائے موت پانے ولے 4 قیدیوں کی بریت اپیلیں مسترد کردیں تاہم ان کی سزائے موت کو عمرقید میں تبدیل کردیا۔دورکنی بنچ نے سزائے موت کے 4قیدیوں ذبیع اللہ ، ذوالفقاراحمد ، طاہرمقبول اورسرفرازاحمد کی بریت کے لئے دائراپیلوں کی سماعت کی۔وکیل صفائی نے موقف اختیارکیا کہ تھانہ سمبڑیال ضلع سیالکوٹ میں کرکٹ میچ کے دوران جھگڑے پر اعجازحسین ، شبیرحسین ، ریاض احمد اورحافظ محمد ارشاد کو قتل کرنے کے جرم میں ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کیاگیا۔ انہوں نے کہا کہ وقوعہ رات کے وقت کا تھا جس میں ملزمان کی شناخت ممکن نہیں تھی۔ملزمان کی مقتولین سے کوئی دشمنی نہیں تھی جبکہ جس شخص محمد سرور سے دشمنی تھی اس کو فائرنگ سے خراش تک نہیں آئی۔ انسدادہشت گردی کی ٹرائل کورٹ نے چشم دید گواہوں کے بیانات میں تضاد اور ناکافی شواہد کے باوجود ملزمان کو سزائے موت کا حکم سنایا۔ وکیل صفائی نے عدالت سے ملزمان کو بری کرنے کی استدعا کی۔ مدعی مقدمہ کی جانب سے اعظم نذیرتارڑاور ڈسٹرکٹ پبلک پراسیکیوٹرطارق جاوید کا کہناتھا کہ ملزمان پولیس تفتیش ، فرانزنک سائنس لیبارٹری اور شناخت پریڈ میں قصوروار ہیں۔ انسدادہشت گردی کورٹ نے میرٹ پرسزائے موت سنائی۔ انہوں نے بریت اپیل مسترد کرنے کی استدعا کی۔ عدالت نے وکلاء کے دلائل سننے کے بعدچاروں قیدیوں کی بریت اپیل مسترد کردی تاہم ان کی سزائے موت کو عمر قید میں تبدیل کردیا۔ بریت کی اپیل مسترد

مزید : صفحہ آخر


loading...