دہشتگردی کے خلاف جنگ ہر قیمت پر جیتیں گے، بنیادی ڈھانچے کی ترقی حکومت کی پہلی ترجیح ہے ، نواز شریف

دہشتگردی کے خلاف جنگ ہر قیمت پر جیتیں گے، بنیادی ڈھانچے کی ترقی حکومت کی پہلی ...

 ملتان ،اسلام آباد (اے این این، آ ن لا ئن، آ ئی این پی, اے پی پی) وزیراعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ دہشتگردی کا خاتمہ اور قومی ایکشن پلان پر عملدرآمد ملک کی سیاسی و عسکری قیادت کا متفقہ فیصلہ ہے،دہشتگردی کے خلاف جنگ ہر قیمت پر جیتیں گے،پاکستان کو ترقی یافتہ ممالک میں شامل کرنے کے لئے قیام امن اور سیاسی جماعتوں کا اتحاد ناگزیر ہے، بنیادی ڈھانچے کی ترقی ہماری حکومت کی پہلی ترجیح ہے، نئی شاہرائیں ، موٹرویز اور ایرپورٹس کی تعمیر و ترقی پر توجہ دی جا رہی ہے،جنوبی پنجاب کی ماضی کی محرومیاں دور کرنے کے لئے میگا پراجیکٹس شروع کئے جا رہے ہیں،ملتان کو جدید موٹروے سے پورے ملک سے جوڑا جا رہا ہے، کراچی لاہور موٹروے کیلئے زمین کی خریداری کر لی گئی ہے،پاک چین اقتصادی راہداری سے ملتان کے عوام کو بھی فائدہ ہو گا،ملکی ترقی کے لئے تمام سیاسی جماعتیں مل کر قومی ایجنڈا تشکیل دیں، آج کی نہیں 25سال بعد کی ضروریات کو مدنظر رکھ کرمنصوبہ بندی کرنا ہو گی۔ملتان میں بین الاقوامی ہوائی اڈے کے نئے ٹرمینل کے افتتاح کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ میں یوسف رضا گیلانی کو خوش آمدید کہتا ہوں ان کی تشریف آوری ہمارے لئے باعث عزت ہے اس ایئر پورٹ اور نئے ٹرمینل کی بنیاد انہوں نے رکھی ،ہم نے اس کو مکمل کیا ہے ،مجھے امید ہے کہ یوسف رضا گیلانی کی امیدوں کے مطابق ایر پورٹ تعمیر ہوا ہے اس اہم منصوبے کے ذریعے ملتان کو ترقی کا مرکز بنانا چاپتے ہیں۔ملتان کی سر زمین اولیائے کرام کی میزبان ہے ، اس دھرتی کی فضا میں خواجہ فرید ؒ کی کافیاں گونج رہی ہیں ، اس شہر اکو امیر خسرو جیسے حفظ زبان صاحب علم نے اپنی محبت کا مرکز بنایا ، پاکستان کے لئے ملتان ایک مرکزی حیثیت رکھتا ہے جہاں شمال و جنوب آپس میں ملتے ہیںیہاں کی سوغات آم اور حلوہ مشہور ہیں یہاں کے لوگ خلوص محبت اور حب الوطنی کا پیکر ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ جغرافیافی و سیاسی اعتبار سے بھی ملتان کو ہمیشہ اہمیت حاصل رہی ہے ،وفاقی اور صوبائی حکومت میں اہل ملتان اہم عہدوں پر فائز رہ چکے ہیں آج بھی یہاں کے لوگوں کا اثرورسوخ ہر سطح پر موجود ہے جنوبی پنجاب میں ملتان ایک اہم ترین علاقہ ہے ، ملتان ایئر پورٹ کو وسعت دے کر اور اس کی تکنیکی سہولتوں میں اضافہ کر کے پورے خطے کے لئے معاشی امکانات کو روشن کیا گیا ہے مجھے بتایا گیا کہ نئی سہولیات بین الاقوامی معیار کے مطابق ہیں پہلے اس ائیر پورٹ سے سول ایوی ایشن اتھارٹی کے ساتھ ساتھ ائیر فورس اور آرمی ایوی ایشن بھی استفادہ کرتے تھے اب اس نئے ٹرمینل کو شہری ہوا بازی کے لئے مخصوص گیا گیا ہے جو یہاں کے لوگوں کا ایک دیرینہ تقاضا تھا جسے آج پایہ تکمیل تک پہنچایا جا رہا ہے اب اسے انٹرنیشنل ایئر پورٹ کا درجہ حاصل ہو گیا ہے اب یہاں کے لوگوں کو بیرون ملک پرواز کے لئے لاہور اور کراچی جانے کی ضرورت پیش نہیں آئے گی اسی طرح بیرون ملک تارکین وطن کو ملتان اور جنوبی پنجاب کے علاقوں کے لئے ان کا اپنا ائیر پورٹ خدمات مہیا کرے گا یہ ان کا حق تھا جو ان کو پیش کیا گیا کیونکہ ملکی معیشت کو مضبوط بنانے کیلئے اپنی محنت سے کمایا ہوازرمبادلہ پاکستان بھیجتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کے کسی بھی علاقے میں ہونیوالی ترقی ملک بھر کیلئے کار آمد اور موثر ہوتی ہے ، ملتان میں انٹرنیشنل ایئر پورٹ کی تکمیل ایک ایسا سنگ میل ہے جس کے اثرات قومی معیشت پر جلد ہی نظر آنا شروع ہو جائیں گے ، انہوں نے کہا کہ قومی لائحہ عمل پر عملدآمد کے لئے سیاسی و عسکری قیادت متفقہ لائحہ عمل طے کر چکی ہیں ، قوم کا اتحاد اس حوالے سے قابل تحسین ہے ، آج وقت ہے کہ متحد ہو کر پاکستان کے مستقل کے لئے تمام سیاسی قوتیں اتفاق رائے سے ترقی کا ایک قومی ایجنڈا ترتیب دیں اور اس پر عملدرآمد کیلئے حکومت کا ساتھ دیں تا کہ ہماراشمار جلد ہی ترقی یافتہ قوم کے ساتھ کیا جائے ۔ انہوں نے کہا کہ انفراسٹرکچر کی ترقی ہماری حکومت کی ترجیحات میں شامل ہے جس کیلئے نئی شاہرائیں ، موٹرویز اور ائیرپورٹس کی تعمیر و ترقی پر توجہ دی جا رہی ہے ، ملتان ایئر پورٹ کی ترقی اسی عظیم ترقیاتی پروگرام کا حصہ ہے اب یہاں دوسرے ممالک کی ایئر لائنز کو سہولتیں فراہم کی جائیں گی ، ملتان سے برآمدات میں اضافہ ہو گا ، خاص طور پر آم کے سیزن میں مینگو فلائٹس ملتان کے خوش ذائقہ اور خوشبودار آم کے ذریعے پوری دنیا میں پاکستان کی مٹھاس اور خوشبو لے کر جائیں گی یہاں کی ٹیکسٹائل انڈسٹری ، شوگر انڈسٹری ، ہینڈی کرافٹ کی برآمدات میں اضافہ ہو گا ، ملتان ایئر پورٹ نئے ترقیاتی سفر کا پہلا مرحلہ ہے ۔ انہوں نے کہا کہ جنوبی پنجاب پر ماضی میں وہ توجہ نہیں دی گئی جس کا یہ حقدارتھا اس لئے ہم زیادہ توجہ سے ترقیاتی پروگرامز شروع کر رہے ہیں تا کہ جو کمی چلی آرہی ہے اس کا ازالہ کیا جائے اس علاقے کو ملک بھر میں مثالی بنایا جائے گا،ملتان کی تعمیر و ترقی کیلئے 29ارب روپے کے منصوبے شروع کئے گئے ان منصوبوں کو جلد مکمل کرنے کیلئے رواں سال ڈیڑھ ارب روپے کی رقم جاری کر دی گئی بہت جلد ملتان اور نواح کے لوگ ان سہولتوں سے مستفید ہو سکیں گے ، ملتان میں دیگر بڑے شہروں کی طرح بہت سے میگا پراجیکٹ شروع کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے جو خاص طور پر صحت اور تعلیم کے حوالے سے اہمیت رکھتے ہیں ،حال ہی میں شہبازشریف نے 51کروڑ روپے کی لاگت سے ہسپتال مکمل کیا گیا ہے ، چلڈکرن ہسپتان کی توسیع اور تکمیل کا منصوبہ آخری مراحل میں ہے 80کروڑ روپے کی لاگت آئی ہے جہاں 150بستروں پر مشتمل توسیعی بلاک کی شاندا ر عمارت میں بچوں کے علاج کیلئے سہولیات مہیا کی جا رہی ہیں ، نشتر ہسپتال میں ون یونٹ کی عمارت مکمل کی جا چکی ہے جہاں بہت جلد علاج کی سہولیات ملنا شروع ہو جائیں گی اور اسی طرح 87کروڑ روپے کی لاگت سے کڈنی سنٹر مکمل ہونیوالا ہے اور ڈسٹرکٹ ہیڈ کوآرٹر ہسپتال کی تعمیر جاری ہے ، نشتر ہسپتال میں آئی سی یو اور آپریشن تھیٹر میں اپ گریڈیشن پر 34کروڑ روپے خرچ کئے جا رہے ہیں اور ملتان کی ڈرگ ٹیسٹنگ لیبارٹری کو بھی دس کروڑ روپے کی لاگت سے اپ گریڈ کیا جا ہرہا ہے صحت کے شعبے کو ترقی سے ہمکنار کرنا ہمارے مقاصد میں سے ایک ہے ، اس کے ساتھ تعلیمی شعبے کو آگے بڑھانا ضروری ہے زرعی یونیورسٹی ، انجنیئرنگ یونیورسٹی اور وومن یونیورسٹی میں کلاسز کا اجراء ہو چکا ہے اب تمام اداروں کیلئے کیمپس قائم کرنے کا سلسلہ شروع کیا جائے گا ۔ انہوں نے کہا کہ ملتان ایئر پورٹ آنے والے راستوں کو محفوظ بنانے کیلئے 31کروڑ روپے کی رقم فراہم کی گئی ہے، ملتان کو جدید موٹروے سے پورے ملک سے جوڑا جا رہا ہے اب ملتان کے عوام کراچی اور خیبر تک کا سفر انتہائی بہتر طریقے سے کرسکیں گے ، ملتان کو لاہور سے ملانے کیلئے 135ارب روپے سے زائد مالی کی رقم سے موٹروے بنا رہے ہیں ،ملتان کو سکھر سے ملانے کیلئے 242ارب روپے کا موٹروے بنایا جا رہا ہے گذشتہ ادوار میں شروع کی گئی ملتان فیصل آباد موٹروے کو تیزی سے مکمل کیا جا رہا ہے ، کراچی لاہور موٹروے کیلئے ہم نے پچھلے سال 55ارب روپے صرف زمین کی خریداری کیلئے دیئے اب زمین کی خرید اری مکمل ہو رہی ہے ،حیدر آباد سے سکھر روڈ کوشروع کیا جائیگا، کوشش ہو گی کہ 2017سے پہلے کراچی لاہور موٹروے بھی مکمل ہو جائے اس کا جنوبی پنجاب کو فائدہ ہو گا ، میں اہل ملتان کو خوشخبری دینا چاہتا ہوں کہ حکومت نے انٹرسٹی رنگ روڈ بنانے کا منصوبہ بنایا ہے وہ 32کلومیٹر طویل ہو گی ،وفاقی حکومت اس کیلئے فنڈ فراہم کریگی اس معاملے میں شہباز شریف کا کوئی ثانی نہیں ،شجاعت عظیم کا شکریہ ادا کرتا ہوں کہ انہوں نے ذاتی دلچسپی لے کرایئر پورٹ کو مکمل کرایا ، پورے ملک میں ملتان ایئر پورٹ خوبصورت نظر آتا ہے سیکرٹری ایوی ایشن ایم اے گردیز ی ، ڈی جی سول ایوی ایشن محمد یوسف اور ان کے ادارے کا شکریہ ادا کرتا ہوں کہ محددو وقت میں ایئر پورٹ کی توسیع اور ترقی کے منصو بے میں اپنا ہاتھ بٹایا ، کیپٹن ندیم اور ان کی ٹیم کو مبارکباد پیش کرتا ہوں ، ایئر پورٹ کو ایک سرے سے دوسرے تک دیکھا ہے اس کی کوالٹی مجھے اچھی لگی ہے ۔قبل ازیں وزیر اعظم نے بین الاقوامی ہوائی اڈے کے نئے ٹرمینل کا افتتاح کیا ، اس موقع پر سابق وزیر اعظم سید یوسف رضا گیلانی ،وفاقی وزیر سکندر بوسن ،وزیرمملکت عابد شیر علی ، وزیر مملکت بلیغ الرحمان ،وزیر اعظم کے معاون خصوصی شجاعت عظیم بھی موجود تھے ، افتتاح کے موقع پر وزیر اعظم کو بتایا گیا کہ ملتان انٹر نیشنل ایئرپورٹ کا سنگ بنیاد 2010میں رکھا گیا تھا عمارت کاسنگ بنیاد سابق وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی نے رکھا تھا ،9ارب روپے کی لاگت سے ایئر پورٹ کی عمارت تعمیر کی گئی ، پہلے مرحلے میں دو ارب روپے سے رن وے کی تعمیر مکمل کی گئی ،دوسرے مرحلے میں سات ارب روپے سے نئی عمارت تعمیر کی گئی ، موثر نگرانی سے منصوبے میں وسائل کی 20فیصد بچت ہوئی ، بین الاقوامی لاؤنجز پر مشتمل نئی عمارت ثقافتی رنگوں سے مزین ہے ، نئے ہوائی اڈے کی تعمیر سے پھلوں اور سبزیوں کی برآمد میں آسانی ہو گی ، نئے ایئر پورٹ پر بیک وقت چار طیاروں کے آپریشنز کی سہولت ہو گی ، ایئر پورٹ بیک وقت دوہزار مسافروں کو سفری سہولیات فراہم کر سکے گا ، بین الاقوامی ہوائی اڈے سے سالانہ دس لاکھ مسافر استفادہ کریں گے ، ملتان ایئر پورٹ ملک کے کشادہ ترین ہوائی اڈوں میں شامل ہو گیا ، تقریب کا آغاز تلاوت قرآ ن پاک سے ہوا ، تلاوت کا شرف قاری عبد الغفار نقشبندی نے حاصل کیا ، تقریب میں قومی ترانہ بھی پڑھا گیا ۔علاوہ ازیں وزیراعظم سیکرٹریٹ میں پاک امریکہ تجارتی مواقع کانفرنس سے خطاب کر تے ہو ئے وزیراعظم نواز شریف نے کہاکہ پاک چین اقتصادی راہداری منصوبے پر تیزی سے کام کررہے ہیں،ملک میں بیرونی سرمایہ کاری راغب کرنے کیلئے فضاء سازگار بنائی جارہی ہے،اب تک قومی گرڈمیں1700 میگاواٹ اضافی بجلی شامل کرچکے، 2017ء میں بجلی کی طلب اوررسدمیں فرق ختم ہوجائے گا ،امریکہ سے برابری اور احترام کی بنیاد پر طویل المدت شراکت داری کاقیام،تجارتی حجم میں اضافہ چاہتے ہیں ۔ وزیراعظم نے کہاکہ پاکستان اقتصادی ترقی کی راہ پر گامزن ہوگیا ہے اور ضروری معاشی ا صلاحات کا عمل جاری ہے۔ اقتصادی بحالی ایک چیلنج ہے اور ہم ڈیڑھ سال سے ٹھوس اقدامات کررہے ہیں ۔ عالمی مالیاتی اداروں نے پاکستانی معیشت پر اعتماد کا اظہار کیا ہے ۔ موڈیز نے ہماری رینکنگ منفی سے مثبت کردی ہے جو حکومت پر اسکے اعتماد کا مظہر ہے ۔ اوورسیز پاکستانیوں کی ترسیلات زر میں اضافہ ہوا ہے کراچی سٹاک ایکسچینج نے ریکارڈ ترقی کی ہے ۔ ہمارے زر مبادلہ کے ذخائر 16 ارب ڈالر تک پہنچ گئے ہیں ۔ یورپی یونین نے ہمیں جی ایس پی پلس کا درجہ دے دیا ہے جس سے ہماری یورپی یونین کو برآمدات میں 20 فیصد اضافہ ہوا ہے ۔ ہم پاک چین اقتصادی راہداری منصوبے پر تیزی سے کام کررہے ہیں اور وسط ایشیائی رابطوں میں بھی اضافہ کیا جارہا ہے جس سے اقتصادی ترقی اور خوشحالی آئے گی ہمیں دہشت گردی اور توانائی کے بحران کا سامنا ہے توانائی بحران کے حل میں امریکہ اہم کردار اداکرسکتا ہے ہم نے اب تک 1700 میگاواٹ اضافی بجلی نیشنل گرڈ میں شامل کی ہے امید ہے 2017ء میں بجلی کا شارٹ فال پورا ہوجائے گا ۔انہوں نے دہشت گردی کا خاتمہ ہماری ترجیح ہے کراچی آپریشن کے بعد ضرب عضب آپریشن شروع کیا گیا ہے اور سانحہ پشاور کے بعد قومی ہنگامی منصوبے پر عملدرآمد جاری ہے۔نواز شریف نے کہاکہ ہم امریکہ سے برابری اور احترام کی بنیاد پر طویل المدت شراکت داری چاہتے ہیں اور اس سلسلے میں یہ کانفرنس مفید ثابت ہوگی ہم امریکہ سے تجارتی حجم میں اضافہ کرنا چاہتے ہیں ۔ امریکی کمپنیاں پاکستان میں بالخصوص توانائی کے شعبے میں سرمایہ لگا سکتی ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان امریکہ کے ساتھ اقتصادی تعلقات کو مضبوط کرنے کیلئے پرعزم ہیں۔ امریکہ سے تعلقات ہماری خارجہ پالیسی کا اہم حصہ ہیں ۔ دونوں ملکوں کے درمیان 6 عشروں سے اچھے تعلقات چلے آرہے ہیں۔ ہم ان تعلقات کو مزید مستحکم کرناچاہتے ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ عالمی سرمایہ کاری کو راغب کرنے کیلئے پاکستان میں سازگار فضا بنائی جارہی ہے اور تاجر دوست پالیسیاں متعارف کرائی جارہی ہیں ۔ تجارتی کمپنیوں کیلئے ون ونڈو آپریشن کردیا گیا ہے۔

مزید : صفحہ اول


loading...