مسلم لیگ ن نے رکن صوبائی اسمبلی وجیہہ الزمان کو پارٹی سے نکال دیا

مسلم لیگ ن نے رکن صوبائی اسمبلی وجیہہ الزمان کو پارٹی سے نکال دیا

 اسلام آباد (اے پی پی) پاکستان مسلم لیگ (ن) نے خیبر پختونخوا سے رکن صوبائی اسمبلی وجیہہ الزمان خان کو سینٹ کے حالیہ انتخابات میں پارٹی نظم و ضبط کی خلاف ورزی پر ان کی بنیادی رکنیت ختم کرتے ہوئے انہیں پارٹی سے نکال دیا ہے۔ وزیراعظم نواز شریف جو پاکستان مسلم لیگ (ن) کے صدر بھی ہیں‘ کی طرف سے دستخط شدہ برطرفی کے لیٹر میں ایم پی اے کو پارٹی کی پالیسی‘ اخلاقیات اور ڈسپلن کے خلاف کام کرنے پر سنگین مس کنڈکٹ کا قصور وار قرار دیا گیا۔ لیٹر میں ایم پی اے کے حوالے سے ایک خبر کا بھی ذکر کیا گیا ہے جس میں کہا گیا کہ اس نے کے پی کے سے سینٹ کے لئے ایک آزاد امیدوار کے طور اپنے قریبی ساتھی کی حمایت کا اعلان کیا۔مزید براں بعض ذاتی مفاد میں اس نے دانستہ طور پر غیر مسلم لیگی امیدوار کو تجویز کیا جس کی تائید بھی ایک اور غیر مسلم لیگی امیدوار کی گئی۔ پارٹی نظم و ضبط کی خلاف ورزی سنگین مس کنڈکٹ کا طرز عمل ہے۔ ایم پی اے کو 28 فروری کو پارٹی کے سیکرٹری جنرل کی جانب سے ایک شوکاز بھی دیا گیا اور ان پر واضح کیا گیا کہ پوری پاکستانی قوم‘ سیاسی جماعتوں اور میڈیا نے بھی اس ایم پی اے یا دیگر ارکان کے رویے کی مذمت کی ہے۔ پارلیمنٹرینز نے ایم پی اے وجیہہ الزمان خان کی طرف سے مفاد پرست امیدوار اور تائید کنندہ کو تجویز کرنے پر تنقید کی اور کہا ہے کہ اس نے تمام سیاسی اور جمہوری اقدار کی توہین کی۔ برطرفی کے خط میں کہا گیا ہے کہ ایم پی اے نے سینٹ انتخابات کو ڈس کریڈٹ کرنے کی کوشش کی اور پارلیمنٹرینز نے اس کی اور ایسے دیگر ارکان کی بدنیت کوششوں کو ناکام بنایا۔ پارٹی صدر نے ایم پی اے کے استعفیٰ کو باطل قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ اس کے استعفیٰ کا مقصد پارٹی کی طرف سے انضباطی کارروائی سے بچنا ہے اور اپنے بدنیت ارادوں کو ظاہر کرنا ہے جو پارٹی نظم و ضبط کی خلاف ورزی کا قصور ثابت کر رہا ہے۔

مزید : صفحہ اول


loading...