مسلم فیملی لاز میں ترمیم کابل ، خواتین اراکین پنجاب اسمبلی کے دلچسپ مگر افسوسناک جوابات

مسلم فیملی لاز میں ترمیم کابل ، خواتین اراکین پنجاب اسمبلی کے دلچسپ مگر ...
مسلم فیملی لاز میں ترمیم کابل ، خواتین اراکین پنجاب اسمبلی کے دلچسپ مگر افسوسناک جوابات

  


لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) عوام کے قیمتی ووٹوں سے قانون ساز اداروں کے رکن بننے والے اراکین عوامی مسائل کے حل اور نئے قوانین کے لیے ایوان میں آتے ہیں جہاں حکومت کو عمومی طورپر مرضی کے بلوں کی منظوری میں جلدی بھی بہت ہوتی ہے جن سے اکثر اراکین لاعلم رہتے ہیں اور بھیڑچال میں حمایت کرکے جان خلاصی کرتے ہیں ۔ ایساہی ایک سروے نجی ٹی وی چینل نے پنجاب اسمبلی کے باہر کیا جہاں ایوان کے اندر پاس ہونیوالے 11بلوں میں مسلم فیملی لاز کا ترمیمی بل بھی شامل تھا۔ اس بارے میں جب خواتین اراکین سے پوچھاگیاکہ ایوان نے بل پاس کیا ہے اور بتائیں کہ اس بل میں کیا نئی بات ہے ؟سوال کے جواب میں خواتین اراکین آئیں بائیں شائیں کرنے لگیں اور جوابات کچھ اس طرح تھے ۔

رکن اسمبلی بشریٰ بٹ نے کہاکہ بل ابھی ابھی پاس ہوا ہے تو ۔۔۔ ویڈیو میں سے اِسے کاٹ دینااور چلتی بنی ۔

پروین اختر نے کہاکہ کیمرہ بند کریں ، ابھی بل پڑھانہیں ، بتاتی ہوں ۔

نسرین جاویدنے کہاکہ پہلے بل پاس کرائیں تو پھر ہی اس کے اندر کچھ ہوگانا،جب سے پاکستان بناہے ابھی تو پاس ہی نہیں ہوا۔

فرزانہ بٹ نے شرماتے ہوئے کہاکہ مجھے پتہ ہے آپ نے ٹی وی پر دکھاناہے ، میں دراصل تسبیح پڑھ رہی تھی،پتہ نہیں چلاکہ کیاہے ۔

مزید : لاہور


loading...