ٹھوس حالت میں صابن کی مقبولیت کی وہ وجوہات جن کے بارے آپ نے کبھی نہیں سوچا

ٹھوس حالت میں صابن کی مقبولیت کی وہ وجوہات جن کے بارے آپ نے کبھی نہیں سوچا
ٹھوس حالت میں صابن کی مقبولیت کی وہ وجوہات جن کے بارے آپ نے کبھی نہیں سوچا

  


لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) مائع شکل میں بھی صابن متعارف ہوچکاہے لیکن اب بھی شہری صابن کو ٹکی کو ترجیح دیتے ہیں ، گو کہ ٹھوس شکل کے صابن کی مقبولیت میں کچھ کمی ضرورہوئی ہے کیونکہ کچھ لوگوں نے شیمپو اور دیگر ڈیٹرجنٹس کو اپنالیاہے تاہم اب بھی صابن کی ٹکی کی مانگ دیگر تمام چیزوں سے زیادہ ہے ۔ اس کی عمومی وجوہات درج ذیل ہیں ۔

روایت

کچھ لوگ روایت پسند ہوتے ہیںاور ہمیشہ سے ہی صابن استعمال کررہے ہیں ۔بی بی سی کے مطابق کاسمیٹکس کمپنی لش کے بانی مارک کانسٹنٹائن کا کہنا ہے کہ یہ ہمیشہ خوشی کی بات ہوتی ہے جب آپ کوئی ایسی چیز استعمال کریں جس کی طویل تاریخ ہو ۔

 ٹھوس صابن زیادہ پرتعیش

ایک پلاسٹک کی بوتل میں صابن کو آپ سونگھ نہیں سکتے اورنہ ہی محسوس کر سکتے ہیں جبکہ اس کے برعکس ہر صابن کی ٹکی کی بناوٹ اور خوشبو مختلف ہوتی ہے جن کی خریداری سے قبل ہی آپ اُن کی خوشبومحسوس کرسکتے ہیں۔

 شاور میں صابن کی ٹکی سے رگڑ کر میل اتارانے کا احساس

اپنے جسم سے رگڑ کر میل اتارنے سے نہ صرف جسمانی اطمینان بلکہ نفسیاتی طور پر بھی انسان مطمئن ہوتا ہے،صبح سویرے نہائیں یا دن بھر کام کے بعد آپ ایک دم تروتازہ ہوجاتے ہیں۔

 کم پیکیجنگ اورماحولیاتی آلودگی

مائع صابن پلاسٹک کی بوتلوں میں آتا ہے اوربوتل خالی ہونے کے بعد کہیں نہ کہیں اسے پھینکنا پڑتا ہے کیونکہ 100 فیصد ری سائیکلنگ نہیں کی جاسکتی۔ دوسری طرف صابن کی ٹکی چھوٹے سے کاغذ کے ٹکڑے میں بند ہو تی ہے۔ اگر آپ ماحولیاتی آلودگی کے متعلق انتہائی فکرمند ہیں تو آپ بغیر کاغذ کی پیکنگ والے صابن بھی خرید سکتے ہیں۔

 بوتلیں استعمال کرنے میں پیچیدگی

صابن کی ٹکی کو آپ ایک ہاتھ میں پکڑ کر استعمال کرسکتے ہیں لیکن مائع صابن کو استعمال کرنے کے لیے پہلے بوتل کو دونوں ہاتھوں میں پکڑ کر اسے کھولنا پڑتا ہے اور مناسب مقدار میں صابن نکالنا بھی ایک مشقت ہی ہوتی ہے۔

ٹکی ختم ہونے تک استعمال کی جاسکتی ہے لیکن جب بوتل میں صابن کم ہو جاتا ہے تو اسے استعمال کرنا مشکل ہوجاتا ہے۔

مزید : بزنس


loading...