سعودی عرب میں مقیم غیر ملکیوں کے لیے انتہائی تشویشناک خبر ، خطرناک قانون متعارف کروانے کی تیاری

سعودی عرب میں مقیم غیر ملکیوں کے لیے انتہائی تشویشناک خبر ، خطرناک قانون ...
سعودی عرب میں مقیم غیر ملکیوں کے لیے انتہائی تشویشناک خبر ، خطرناک قانون متعارف کروانے کی تیاری

  


ریاض (مانیٹرنگ ڈیسک) سعودی وزارت لیبر نے ان اطلاعات کی تردید کی ہے کہ مملکت میں غیر ملکیوں کاقیام آٹھ سال تک محدود کیا جا رہا ہے البتہ ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ یہ تجویز زیر غور ہے اور اس پر عملدرآمد ہو سکتا ہے۔

نیوز ویب سائٹ ”عرب نیوز“ کا کہنا ہے کہ ذرائع سے یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ یہ منصوبہ مرحلہ وار نافذ کیا جائے گا تاکہ ملازمین اور آجروں کو منفی نتائج کا سامنا نہ کرنا پڑے۔

سعودی عرب میں غیر ملکی ہو جائیں ہوشیار،ہو گئے سب محکمے یک جاں

وزارت کی تردید امریکی اخبار ”وال سٹریٹ جرنل“ کی ایک رپورٹ کے بعد آئی ہے جس میں کہا گیا تھا کہ سعودی عرب اپنے شہریوں کے بیروزگاری کم کرنے اور تیل کی قیمتوں میں کمی کے اثرات کو زائل کرنے کیلئے غیر ملکی ملازمین کو محدود کر رہا ہے۔ اخبار نے اپنی رپورٹ میں ذرائع یا کسی وزارت کے نمائندہ کا حوالہ نہ دیا تھا۔ البتہ یہ بتایا تھا کہ اس فیصلے کا ہدف خصوصی طور پر کم آمدنی والے ملازمین مثلاً ڈرائیور، دکانوں پر کام کرنے والے یا گھریلو ملازمین وغیرہ ہوں گے۔

مشرقی صوبہ چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کی کنٹریکٹرز کمیٹی کے چیئرمین خلیفہ الدبیب کا کہنا ہے کہ وہ ملازمین کی مدت ملازمت و قیام کو محدود کرنے کے خلاف ہیں کیونکہ اس طرح آجروں کو اپنے تجربہ کار ملازمین کو برخاست کرنا پڑے گا۔ انہوں نے تجویز دی کہ ملازمین کے قیام کو محدود کیا جائے لیکن اس کے بعد انہیں اجازت دی جائے کہ وہ نئے معاہدے کے تحت اسی کمپنی یا کسی دیگر کمپنی کیلئے دوبارہ کام کر سکیں۔

مزید : بین الاقوامی


loading...