بھاری لاگت سے تیار کردہ ائیر ڈیفنس سسٹم اسرائیل کو تحفظ دلانے میں ناکام ، صہیونی فوج میں تشویش

بھاری لاگت سے تیار کردہ ائیر ڈیفنس سسٹم اسرائیل کو تحفظ دلانے میں ناکام ، ...
بھاری لاگت سے تیار کردہ ائیر ڈیفنس سسٹم اسرائیل کو تحفظ دلانے میں ناکام ، صہیونی فوج میں تشویش

  


مقبوضہ بیت المقدس ( مانیٹرنگ ڈیسک ) اسرائیل کے بھاری لاگت سے تیار کردہ ایئر ڈیفنس سسٹم کی کارکردگی پر صیہونی فوج گہری تشویش کا شکار ہوگئی ہے۔تفصیلات کے مطابق اسرائیلی فضائیہ کی جانب سے بھاری لاگت سے نیا ایئر ڈیفنس سسٹم ”آئرن ڈوم“ تیار کیا ہے جس کی کارکردگی کو لے کر صہیونی فوج تشویش کا شکار ہو گئی ہے۔اسرائیلی فضائیہ کے سربراہ میجر جنرل ایچل کا کہنا تھا کہ آئرن ڈوم اسرائیل کو تحفظ دلانے میں ناکام ہو چکا ہے۔جبکہ اس سسٹم کے ذریعے 3245 فلسطینی راکٹوں میں سے صرف 558 کو روکا جاسکا ہے۔جبکہ اس کے بارے میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ یہ سسٹم قومی خزانے پر بوجھ ہے۔ صیہونی فوجی جنرل نے ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے خبردار کیا کہ اس سے قبل بھی آئرن ڈوم کی کارکردگی پر سوال اٹھتے رہے ہیں مگر ہم نے دیکھا ہے کہ یہ دفاعی نظام یہودی کالونیوں کو تحفظ دلانے میں بری طرح ناکام رہا ہے۔

امریکہ پاکستان کو بھی بھارت جیسے ایٹمی معاہدے کی پیشکش کرے

انہوں نے مزید کہا کہ کل کو اگر مقبوضہ فلسطین کے 1948 کے علاقوں میں فلسطینیوں کے راکٹ حملے ہوتے ہیں تو یہ نظام وہاں بھی کام نہیں کرے گا۔ انہوں نے کہا کہ آئرن ڈوم کو فلسطینی راکٹ حملوں کے دفاع کے نقطہ نظر سے تیار کیا گیا تھا لیکن اس نے صیہونی ریاست کو کسی قسم کا تحفظ فراہم نہیں کیا ہے۔ جنرل ایچل نے اعتراف کرتے ہوئے کہا ہے کہ جزوی طور پر آئرن ڈوم نے فلسطینی راکٹ حملوں کا دفاع کیا ہے لیکن انھیں مکمل طور پر روکنے میں ناکام رہا ہے۔

مزید : بین الاقوامی


loading...