قانون کا علم سیکھنا مسلسل عمل پریکٹس اور جج بننے سے آگاہی نہیں ملتی،چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ

قانون کا علم سیکھنا مسلسل عمل پریکٹس اور جج بننے سے آگاہی نہیں ملتی،چیف جسٹس ...

  



لاہور(نامہ نگارخصوصی)چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ مسٹر جسٹس مامون رشید شیخ نے کہا ہے کہ صرف قانون کا امتحان پاس کر نے اورچند سال کی پریکٹس کے بعد جج بننے سے قانون سے آگاہی نہیں ملتی۔ قانون کا علم سیکھنا ایک مسلسل عمل ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے پنجاب جوڈیشل اکیڈمی میں زیر تربیت ججوں کے 14ویں تربیتی کورس کے افتتاحی سیشن سے خطاب کرتے ہوئے کیا،چیف جسٹس نے مزید کہا کہ(بقیہ نمبر18صفحہ12پر)

انصاف کی فراہمی عدلیہ کااولین فرض ہے،جج مقدمات میں غیر ضروری تاریخیں دینے سے اجتناب کریں، جدید دور کے تقاضوں کے مطابق پرانے قوانین میں ترامیم اور نئے قوانین کا اجراء ہوتا رہتا ہے۔بار ایسوسی ایشنز کی جانب سے ہڑتال کلچر کے خاتمے کی بات کی خوش آئند ہے۔تقریب سے ڈی جی پنجاب جوڈیشل اکیڈمی حبیب اللہ عامر نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہمارے جج قانون کے پابند ہیں، قانون پر عبور رکھنا ججوں کے لئے ناگزیر ہے، بدلتے قوانین اور جدید عدالتی امور کے پیش نظر ججوں کے لئے تربیتی کورسز کرنا ضروری ہوگیا ہے۔تقریب میں رجسٹرار لاہور ہائیکورٹ اشترعباس، ڈی جی ڈسٹرکٹ جوڈیشری ریحان بشیر اور سیشن جج ہیومن ریسورس ساجد علی اعوان سمیت اکیڈمی کے انسٹرکٹرز اور افسران بھی موجود تھے۔

ججز کورس

مزید : ملتان صفحہ آخر /صفحہ آخر