قابض فوج کی دہشت گردی،مزید 2کشمیری شہید،بھارتی فوجی اڈے میں دھماکہ،2مسلم مزدور جاں بحق، 3زخمی

قابض فوج کی دہشت گردی،مزید 2کشمیری شہید،بھارتی فوجی اڈے میں دھماکہ،2مسلم ...

  



سرینگر(مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) مقبوضہ کشمیر میں قابض بھارتی فوج نے ریاستی دہشت گردی کا مظاہرہ کرتے ہوئے 2نوجوانوں کو شہید کردیاجبکہ مقبوضہ وادی میں واقع بھارتی فوج کے اڈے میں زوردار دھماکے کے نتیجے میں 2 مزدور ہلاک اور 3 زخمی ہوگئے۔ تفصیلا ت کے مطابق مقبو ضہ کشمیر میں بھارتی ریا ستی دہشت گردی کا سلسلہ تاحال جاری ہے جہاں گھرگھر تلاشی کی آڑ میں کشمیریوں کو شہید کیا جارہا ہے۔کشمیر میڈیا سر و س کے مطابق وادی میں قابض بھارتی فوج نے ضلع شوپیاں کے علاقے خواجہ پورہ میں سرچ آپریشن کیا اور اس دورا ن علاقے کی مکمل نا کہ بندی کردی۔کے ایم ایس کے مطابق قابض فوج نے پیر کے روز سرچ آپریشن کی آڑ میں 2کشمیری نوجوانوں کو شہید کیا۔ادھر اننت ناگ میں واقع بھارتی فوجی بیس میں پانچ مزدور تعمیراتی کام میں مشغول تھے کہ اچانک زوردار دھماکا ہو گیا، دھماکا اتنا شدید تھا کہ فوجی اڈے میں کھڑی ملٹری گاڑیوں کے شیشے ٹوٹ گئے اور عمارت کو بھی نقصان پہنچا۔دھماکے میں 2 افراد ہلاک اور 3 شدید زخمی ہوگئے جنہیں قریبی واقع ملٹری ہسپتال منتقل کردیا گیا، ہلاک ہونیوالوں کی شناخت فیاض احمد اور گلزار احمد کے نام سے ہوئی ہے۔ ایک زخمی کی حالت نازک ہے۔دھماکے کی نوعیت اور واقعے کی مکمل تحقیقات کیلئے انکوائری کمیٹی تشکیل دیدی گئی ہے تاہم دھماکے سے متعلق بھا ر تی فوج نے کسی قسم کا بیان جا ری کرنے سے گریز کیا ہے جبکہ صحافیوں کو بھی جائے وقوعہ جاننے کی اجازت نہیں دی جا رہی۔یاد رہے بھارت نے 5اگست کو راجیہ سبھا میں کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے کا بل پیش کرنے سے قبل ہی صدارتی حکم نامے کے ذریعے کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کردی اور سا تھ ساتھ مقبوضہ کشمیر کو وفاق کے زیرِ انتظام دو حصوں میں تقسیم کردیا جس کے تحت پہلا حصہ لداخ جبکہ دوسرا جموں اور کشمیر پر مشتمل ہوگا۔مقبوضہ جموں و کشمیر کے پہاڑی ضلع شوپیان کے خواجہ پورہ ریبن امام صاحب علاقے میں نماز جنازہ کی ادائیگی کے بعد دو شہید نوجوانوں شبیر احمد ملک اور عامر احمد ڈار کو ہزاروں لوگوں کی موجودگی میں آبائی علاقوں میں اسلام و آزادی کے حق میں فلک شگاف نعروں کے درمیان آبائی علاقوں میں سپرد خاک کیا گیا جبکہ تجہیز و تکفین میں لوگوں کی بھاری تعداد نے شرکت کی۔

مقبوضہ کشمیر

مزید : صفحہ اول