سعودی عرب میں داخلے پر اب جو شخص یہ چیز چھپائے گا اسے 2 کروڑ روپے جرمانہ کیا جائے گا

سعودی عرب میں داخلے پر اب جو شخص یہ چیز چھپائے گا اسے 2 کروڑ روپے جرمانہ کیا ...
سعودی عرب میں داخلے پر اب جو شخص یہ چیز چھپائے گا اسے 2 کروڑ روپے جرمانہ کیا جائے گا

  



ریاض(مانیٹرنگ ڈیسک) سعودی حکومت کورونا وائرس کو ملک میں داخل ہونے اور پھیلنے سے روکنے کے لیے انتہائی کڑے اقدامات اٹھا رہی ہے۔ چند روز قبل خانہ کعبہ میں طواف بھی روک دیا گیا اور اب اگرچہ مسجد حرام کھول دی گئی ہے تاہم اب بھی کئی پابندیاں برقرار ہیں اور عازمین عمرہ ادا نہیں کر سکتے۔ اب اس حوالے سے سعودی حکومت نے ایک اور انتہائی سخت قدم اٹھا لیا ہے۔ سپوتنک کے مطابق سعودی وزارت داخلہ کی طرف سے اعلان کیا گیا ہے کہ آئندہ جو شخص بھی ملک کے انٹری پوائنٹس پر اپنی صحت اور سفر کے روٹ کے متعلق غلط بیانی کرے گا اس کو 1لاکھ 33ہزار ڈالر (تقریباً 2کروڑ 10لاکھ روپے)تک کا بھاری جرمانہ کیا جائے گا۔

رپورٹ کے مطابق سعودی عرب میں اب تک کورونا وائرس کے 15کیس سامنے آ چکے ہیں اور یہ سب کیس مشرقی صوبے الشرقیہ میں سامنے آئے ہیں۔ متاثرہ لوگوں میں کئی ایسے لوگ شامل تھے جو ایران سے براہ راست یا کسی دوسرے ملک سے ہوتے ہوئے الشرقیہ پہنچے تھے۔ ان میں سے تین مریض ایسے تھے جو ایران سے متحدہ عرب امارات پہنچے اور وہاں سے سعودی عرب گئے تاہم انہوں نے انٹری پوائنٹس پر سعودی حکام کو یہ نہیں بتایا کہ وہ ایران سے ہو کر آ رہے ہیں۔ الشرقیہ پہنچ کر یہ لوگ مزید لوگوں میں وائرس کے پھیلاﺅ کا سبب بنے۔

یہی وجہ ہے کہ سعودی حکومت کی طرف سے اتنے بھاری جرمانے کا اعلان کیا گیا ہے۔ ایران کورونا وائرس سے متاثر ہونے والے چند بڑے ممالک میں سے ایک ہے جہاں اب تک 7ہزار سے زائد کیس سامنے آ چکے ہیں اور کئی ہلاکتیں بھی ہو چکی ہیں۔گزشتہ روز سعودی فرماں روا شاہ سلمان کی طرف سے عالمی ادارہ صحت کو 1کروڑ ڈالر کا عطیہ دینے کا بھی اعلان کیا گیا ہے جسے وہ کورونا وائرس کے خاتمے کے لیے کیے جانے والے اقدامات پر خرچ کرے گا۔

مزید : عرب دنیا