ایڈووکیٹ شہباز تتلہ قتل کیس، ایس ایس پی مفخر عدیل کو لاہور منتقل کردیا گیا

ایڈووکیٹ شہباز تتلہ قتل کیس، ایس ایس پی مفخر عدیل کو لاہور منتقل کردیا گیا
ایڈووکیٹ شہباز تتلہ قتل کیس، ایس ایس پی مفخر عدیل کو لاہور منتقل کردیا گیا

  



لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) ایڈووکیٹ شہباز تتلہ قتل کیس کے مرکزی ملزم ایس ایس پی مفخر عدیل کو لاہور منتقل کردیا گیا ہے۔

نجی ٹی وی کے مطابق ایس ایس پی مفخر عدیل کو کچھ روز پہلے گلگت بلتستان سے گرفتار کیا گیا تھا اور انہیں منگل کے روز لاہور منتقل کیا گیا ہے۔ ان پر الزام ہے کہ انہوں نے اپنے قریبی دوست شہباز تتلہ ایڈووکیٹ کو قتل کرکے اس کی لاش کو تیزاب کے ڈرم میں ڈال کر ثبوت مٹادیے تھے۔

دوسری جانب نجی ٹی وی 92 نیوز نے ذرائع کے حوالے سے کہاہے کہ مفخر عدیل اتوار کی شام سات بجے لاہور کے تھانے کے افسر کے پاس پیش ہوئے کیونکہ ان کی والدہ پولیس کی حراست میں تھیں جس کے باعث وہ نہ صرف پیش ہوئے بلکہ ان سے تفتیش بھی کر لی گئی ہے۔

مفخر عدیل سے جب ملازم اور دوست اسد بھٹی کو سامنے بیٹھا کر تفتیش کی گئی تو انہوں نے اقرار کیا کہ وہ قتل میں ملوث ہے ، ذرائع نے بتایا کہ مفخر عدیل نے یہ بھی اعتراف کر لیاہے انہوں نے تیزاب کو چار مرتبہ تبدیل کیا تاکہ شہباز تتلہ کی لاش مکمل طور پر جل جائے اور ہڈیاں بھی باقی نہ رہیں۔

ذرائع کا کہناتھا کہ پولیس نے اپنی کارروائی ڈالنے کیلئے یہ کہنا شروع کر دیاہے کہ مفخر عدیل کو گلگت بلتستان سے گرفتار کیا گیا ہے کیونکہ پولیس اس بات سے بچنا چاہتی ہے کہ اس راز سے پردہ نہ اٹھ جائے کہ جب مفخر عدیل خود پیش ہوئے تو ان کے ساتھ اس وقت دو اعلیٰ پولیس افسرا اور ایف آئی اے کا اعلیٰ افسر بھی موجود تھے۔

پولیس نے اپنی کارکردگی پرسوالیہ نشان سے بچنے کیلئے کہنا شروع کر دیاہے کہ سی آئی اے کا سٹاف مفخر عدیل کو گلگت بلتستان سے گرفتار کر کے لایا گیا ہے۔

مزید : اہم خبریں /علاقائی /پنجاب /لاہور