ذاتی چھت ہر غریب اور کم آمدنی والے فرد کا حق ، وزیراعظم نے بے گھر افراد کو خوشخبری سنا دی 

ذاتی چھت ہر غریب اور کم آمدنی والے فرد کا حق ، وزیراعظم نے بے گھر افراد کو ...
ذاتی چھت ہر غریب اور کم آمدنی والے فرد کا حق ، وزیراعظم نے بے گھر افراد کو خوشخبری سنا دی 

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ بے گھر افراد کو اپنی چھت حاصل کرنے میں سہولت فراہم کرنا موجودہ حکومت کی اولین ترجیح ہے،ذاتی چھت ہر غریب اور کم آمدنی والے فرد کا حق ہے اور حکومت اس حق کی فراہمی میں  ہر طرح سے سہولت پہنچانے کے لئے پر عزم ہے۔

وزیرِ اعظم عمران خان کی زیر صدارت نیشنل کوآرڈینیشن کمیٹی برائے ہاؤسنگ، کنسٹرکشن اینڈ ڈویلپمنٹ کا ہفتہ وار اجلاس ہوا جس میں اجلاس کو بتایا گیا کہ ہاؤسنگ اور کنسٹرکشن کےمنظور شدہ اورزیرغورمنصوبوں  کی کل معاشی سرگرمی کا حجم2.07 ٹریلین روپےہے،17 اپریل 2020ء سے اب تک  ہاؤسنگ اینڈ کنسٹرکشن کے کل 307 منصوبوں  جس میں 39.83 ملین مربع فٹ پر تعمیرات شامل ہیں کی منظوری دی جا چکی ہے،مزید 64.12 ملین مربع فٹ  رقبے پر تعمیر کے  526 منصوبوں کی منظوری کا عمل زیر غور ہے۔

اجلاس کو بتایا گیا کہ اب تک منظور شدہ منصوبوں کے نتیجے میں 796.5 ارب  روپیکی معاشی سرگرمی پیدا ہو رہی ہے،زیر غور منصوبوں کی منظوری کے نتیجے میں مزید  1.28 ٹریلین روپے کی معاشی سرگرمی پیدا ہوگی،ان منصوبوں کے نتیجے میں  ڈھائی لاکھ افراد کو براہ راست جبکہ ساڑھے چار لاکھ افراد کو بالواسطہ نوکریوں کے مواقع میسر آئیں گے۔ اجلاس کو بتایا گیا کہ ایل ڈی اے کی جانب سے 11.03 ملین مربع فٹ رقبے پر تعمیرات  کے 3435 منصوبوں کی منظوری دی جا چکی ہےجبکہ 700 منصوبےمنظوری کےلئےزیرغور ہیں راولپنڈی ڈویلپمنٹ اتھارٹی کی جانب سے 4.8 ملین مربع فٹ پر تعمیرات کے اب تک 67 منصوبوں کی منظوری دی جا چکی ہے جبکہ 51 منصوبے زیر غور ہیں،سی ڈی اے کی جانب سے 12.8 ملین مربع فٹ پر تعمیرات کے 121 منصوبوں کی منظوری دی جا چکی ہے جبکہ 18.7 ملین مربع فٹ تعمیرات کے 142 منصوبے منظوری کے لئے زیر غور ہیں،سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کی جانب سے 9.1 ملین مربع فٹ کے 33 منصوبوں کی منظوری دی جا چکی ہے جبکہ 40.8 ملین مربع فٹ کے 269 منصوبے منظوریوں کے منتظر ہیں۔

وزیرِ اعظم نے سندھ میں منظوریوں  کے عمل پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ تعمیراتی سرگرمیوں کے فروغ سے پیدا ہونے والی معاشی سرگرمی کا براہ راست فائدہ سندھ کی عوام اور صوبے کو ہوگا۔اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ عرصہ دراز سے   منظوریوں کی وجہ سے التوا کا شکار ہونے والے تعمیراتی منصوبوں  کے تمام کیسز نیب کو بھیجے جائیں گے تاکہ ذمہ داران کا تعین کیا جا سکے اور  جان بوجھ کر تاخیر کرنے والے ذمہ داران کے خلاف کارروائی کی جا سکے۔

چیف سیکرٹری پنجاب نے اجلاس کو بتایا کہ  اراضی ریکارڈ  کی تصدیق کے حوالے سے بنکوں کی سہولت کے   پورٹل قائم کرکے اسے فعال بنایا جا چکا ہے،پورٹل پر بنک کی جانب سے ریکارڈ کی تصدیق کا عمل پانچ دنوں میں مکمل کرنے کو یقینی بنایا گیا ہے، اس سے قبل اس عمل میں مہینوں کا عرصہ گزر جاتا تھا،اگلے مرحلے میں بنکوں کو اراضی ریکارڈ  سے متعلقہ  دستاویز  کی فراہمی کو یقینی بنایا جائے گا۔

وزیرِ اعظم نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بے گھر افراد کو اپنی چھت حاصل کرنے میں سہولت فراہم کرنا موجودہ حکومت کی اولین ترجیح ہے، ذاتی چھت ہر غریب اور کم آمدنی والے فرد کا حق ہے اور حکومت اس حق کی فراہمی میں  ہر طرح سے سہولت پہنچانے کے لئے پر عزم ہے،چیئرمین سی ڈی اے نے وفاقی دارالحکومت میں کم آمدنی والے افراد کے لئے شروع کیے جانے والے منصوبوں کے حوالے سے وزیرِ اعظم کو بریفنگ دیتے ہوئےبتایا کہ پہلے مرحلے میں پانچ ہزار یونٹس تعمیر کیے جائیں گے جس کا سنگ بنیاد اپریل کے پہلے ہفتے میں رکھا جائے گا۔

مزید :

قومی -رئیل سٹیٹ -