سینیٹ الیکشن میں خرید و فروخت ،حکومتی رکن قومی اسمبلی صداقت عباسی نے ایسا اعتراف کر لیا کہ ہر کوئی پریشان ہو جائے

سینیٹ الیکشن میں خرید و فروخت ،حکومتی رکن قومی اسمبلی صداقت عباسی نے ایسا ...
سینیٹ الیکشن میں خرید و فروخت ،حکومتی رکن قومی اسمبلی صداقت عباسی نے ایسا اعتراف کر لیا کہ ہر کوئی پریشان ہو جائے

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان تحریک انصاف کے رہنما اور ممبر قومی اسمبلی صداقت علی عباسی نے کہا ہے کہ سینیٹ الیکشن میں ہونے والی خرید و فروخت  پر ہم اس جمہوریت سے شرمندہ ہیں، اس بات میں کوئی شک نہیں ہے کہ ہم شفافیت کے لئے آئے تھے ،کوئی ہمیں ،ہمارے ہی دور میں خرید کر چلا جائے تو واقعی ہمارے لئے ڈوب مرنے کا مقام ہے،ہم میں سے جو بھی بکا اُس نے اپنا منہ کالا کیا اور جس نے خریدا اُس نے پوری جمہوریت کا منہ کالا کیا ،ہم اِن چوروں کو  اب خرید و فروخت نہیں کرنے دیں گے اور نہ ہی کوئی ایسا حربہ استعمال  کرنے دیں گے۔

نجی ٹی وی کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے صداقت عباسی نے کہا کہ ہم گھبرائے ہوئے ہیں ،ہم شرمندہ ہیں ،ہم سمجھتے ہیں کہ ہمارا منہ کالا کر دیا گیا ہے، ہم سمجھتے ہیں کہ جمہوریت کا منہ کالا کیا گیا ہے ،ہم سمجھتے ہیں کہ پاکستانی قوم اور پارلیمان  کی توہین کی گئی ہے،جب ایک سابق وزیر اعظم جس کو نا اہل ، کرپٹ اور بے ایمان  قرار دے کر نکالا گیا ہو ، اُن کے بیٹے سڑکوں پر ایم این ایز جو ساڑھے آٹھ لاکھ لوگوں کا نمائندہ ہوتا ہے  اور بڑی ہی معتبر اور متبرک جگہ یعنی پارلیمان میں وہ بستا ہے اُس کا سودا لگاتے وہ پکڑے گئے ،کچھ بکے بھی اور کسی نے خریدا بھی اور جمہوریت کے منہ پر کالک ملی ،اسی لئے ہم گھبرائے ہوئے بھی ہیں،پریشان بھی ہیں ،شرمندہ بھی ہیں ،ہم سمجھتے ہیں کہ مجھے کوئی ڈھائی کروڑ کا خریدے تو پھر مجھے ڈوب کر مر جانا چاہئے ،پھر مجھے اس پارلیمان میں نہیں بیٹھنا چاہئے ،اس جمہوریت پر تھوکنا چاہئے جو اس طرح بک، بک کر اور خرید ،خرید کر ایوان میں گئے ،ہم آئے تھے شفافیت کے لئے اور ہمیں کوئی ہمارے دور میں خرید کر چلا جائے تو واقعی ہمارے لئے ڈوب مرنے کا مقام تھا ۔

اُنہوں نے کہا کہ ہم میں سے جو بھی بکا اُس نے منہ کالا کیا اور جس نے خریدا اُس نے پوری جمہوریت کا منہ کالا کیا ،میں تو یہ سمجھتا ہوں کہ کوئی اخلاقی معیار نہیں ہے،ایسے لوگ آپ روز سینیٹ کے چیئرمین بنائیں یا صدر بنائیں ،وزیراعظم بنائیں ،اپنا منہ کالا کرنے والی بات ہے،میں سمجھتا ہوں کہ بطور ممبر پارلیمان  اخلاقی طور  پر شرمندہ ہیں ،اب ہم ہر وہ حربہ اختیار کریں گے کہ یہ چور جن کو ہم نے شکست دی ،ان کو ہم نے پارلیمان اور حکومتوں سے ہٹایا ،اب ان کو پاکستانی قوم کی مدد سے شکست دیں گے ،ہم ان چوروں کو  اب خرید و فروخت نہیں کرنے دیں گے اور نہ ہی کوئی ایسا حربہ استعمال  کرنے دیں گے ،یہ اُن اداروں کی ذمہ داری تھی کہ یہ منڈی نہ لگتی ،قوم کے سامنے ہم نے اپنی پوری کوشش کی ،عمران خان اور ان کی ٹیم اس منڈی کو اجاڑنے میں ناکام رہی کیونکہ دوسری طرف جو سوداگر تھے اُن کے پاس پیسے بھی بہت تھے ،پیسے بھی اسی قوم اور لوٹ مار کے تھے ،اُنہوں نے منڈی لگائی اور ہمارے بندے خریدے ،اس لئے میں ٹی وی پر بیٹھ کر کہہ رہا ہوں کہ ہم اس جمہوریت سے شرمندہ ہیں ۔

صداقت عباسی کا کہنا تھا کہ یوسف رضا گیلا نی کے علاوہ کوئی دوسرا شخص بکنے والے ایم این ایز کے نام نہیں بتا سکتا ،وہ ہمیں لسٹ فراہم کریں اور پیسوں کی تفصیل بتائیں، پھر ہم کارروائی کر سکتے ہیں  یا پھر یہ ہو سکتا ہے کہ کوئی خود ہی اقبال جرم کر لے

مزید :

علاقائی -اسلام آباد -