یوسف رضا گیلانی کی سرکاری گاڑی کو ٹیکسی کے طور پر استعمال کرنے کا معاملہ، ڈرائیور کا تہلکہ خیز بیان سامنے آگیا

یوسف رضا گیلانی کی سرکاری گاڑی کو ٹیکسی کے طور پر استعمال کرنے کا معاملہ، ...
یوسف رضا گیلانی کی سرکاری گاڑی کو ٹیکسی کے طور پر استعمال کرنے کا معاملہ، ڈرائیور کا تہلکہ خیز بیان سامنے آگیا

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن )سینیٹ میں اپوزیشن لیڈر یوسف رضا گیلانی کے ڈرائیور نے بیان دیا ہے کہ معاملے کو غلط رنگ دیا گیا ہے جس وقت ویڈیو بنائی گئی اس وقت میرے سوا گاڑی میں کوئی اور موجود نہیں تھا۔

تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز یوسف رضا گیلانی کے ڈرائیور کی جانب سے سرکاری گاڑی کو بطور ٹیکسی استعمال کی ویڈیو سامنے آئی تھی۔سینیٹ سیکرٹریٹ کی گاڑی مبینہ طور پر پبلک سواری کے لیے استعمال کرنےکا الزام عائد کیا گیا تھا۔اس حوالے سے وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی شہباز گل نے ٹویٹ کرتے ہوئے کہا تھا کہ ’چلیں جی جنہوں نے سینیٹ چئیرمین بننا تھا انہوں نے سرکاری گاڑی پر ٹیکسی سروس شروع کر دی۔  دیہاڑی ہر صورت لگانی ہے بھلے کیسے بھی لگے۔  یہ حرکت ایسی ہے کہ اس پر بیان دینے کو بھی دل نہیں کرتا۔‘

تاہم اب معاملے میں گاڑی کے ڈرائیور رفیق احمد کا بیان سامنے آیا جس میں انہوں نے کہا ہے کہ میں عید کی چھٹیوں پرگاؤں جارہا تھا، اپنے ساتھی کو کہا کہ مجھے  موٹر وے چوک پر چھوڑ دے۔ میں خود ڈرائیو کر رہا تھا، گاڑی روک کر دوست سے کہا کہ گاڑیوں کا پتہ کرو یہاں سے بیٹھ جاؤں گا۔میری گاڑی غلط پارکنگ پر کھڑی ہوئی تھی، موٹر وے پولیس والا آیا اور کہا گاڑی غلط پارکنگ پر کھڑی ہے، اتنے میں کسی نے ویڈیو بنالی اور غلط طور پروائرل کی۔ڈرائیور رفیق احمد نے کہا کہ میری گاڑی میں کوئی موجود نہیں تھا میں اکیلا تھا، کسی نے ویڈیو بنائی ہے اور کہا کہ سرکاری گاڑی ہے پیسنجر اٹھاتی ہے۔

مزید :

قومی -