پاکستانی بیٹنگ لائن نے قوم کو بہت مایوس کیا،سابق کرکٹرز

پاکستانی بیٹنگ لائن نے قوم کو بہت مایوس کیا،سابق کرکٹرز

  

لاہور( افضل افتخار) پاکستانی بیٹنگ لائن نے قوم کو بہت مایوس کیا اور اسی وجہ سے ٹیم کو جنو بی افریقہ کے ہاتھوں شکست کا سامنا کرنا پڑا ان خیالات کا اظہار سابق پاکستانی کرکٹرزنے قومی ٹےم کی جنوبی افریقہ کے ہاتھوں ون ڈے سیریز میں شکست پر مایوسی کا اظہا ر کرتے ہوئے کیا سرفراز نواز نے کہا کہ پاکستانی ٹیم نے وہی غلًطی کی جو اس سے قبل کی تھی اور اس کو شکست ہوئی تھی بیٹسمینوں نے آغاز تو اچھا کیا لیکن اس کے بعد کوئی بھی بیٹسمین اپنی ذمہ داری نہ سمجھ سکا اور اس کو شکست ہوئی ضرور ت اس بات کی ہے کہ پاکستانی بیٹنگ پر توجہ دی جائے سابق باﺅلر شعیب اختر نے کہا کہ پاکستانی کپتان مصباح الحق ٹیم کو ساتھ لیکر نہیں چلیں ان میں کپتانی کا فقدان جس کو دور کرنے کی ضرورت ہے اس کے علاوہ سابق کپتان عامر سہیل نے کہا ہے کہ پاکستان میں کرکٹ کے تباہ حال انفراسٹرکچر کی بحالی کیلئے سخت اقدامات کی ضرورت ہے جب تک اس طرف توجہ نہیں دی جائے گی اس وقت تک ملک میں کرکٹ کے کھیل میں ترقی ممکن نہیں ہے اس طرف توجہ دینے کی اشدضرورت ہے باسط علی نے کہا کہ پاکستان کی ٹیم پریشر میں آجاتی ہے اس کو پریشر میں آئے بغیر کھیلنے کی ضرورت ہے اس وقت تک ٹیم کامیابی حاصل نہیں کرے گی جب تک کھلاڑی ڈٹ کر مقابلہ نہیں کریں گے صہیب مقصود نے بہترین بیٹنگ ان کے علاوہ کوئی اور بیٹسمین نہیں چل سکا۔

شعیب اختر نے کہا کہ پاکستانی کرکٹ ٹیم نے جنوبی افریقہ کو ون ڈے سیریز گفٹ کی ہے۔ بنگلہ دیشی ٹیم ہوتی تو پروٹیز کو پانچ ،صفر سے ہراتی۔ انہوں نے کہا کہ مصباح الحق کے رنز کرنے سے کچھ نہیں ہوتا کیونکہ دیگر بیٹسمینوں کو بھی حصہ ڈالنا ہوگا۔ پاکستان کرکٹ میں لیڈر شپ کی کمی ہے اگر ٹیم کا یہ ہی حال رہاتو لوگ کرکٹ دیکھنا چھوڑ دیں گے۔محمد یوسف نے جنوبی افریقہ کیخلاف ون ڈے سیریزمیں شکست پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ اسپنرز کی کارکردگی باعث اطمینان ہے تاہم بیٹسمینوں نے مایوس کیا جو پلیئنگ کنڈیشنز میں تبدیلی کا بھی فائدہ نہ اٹھا سکے۔

مزید :

کھیل اور کھلاڑی -