امامیہ سٹوڈنٹس کی گوجرانوالہ میں امام بارگاہوں پر حملوں کی مذمت

امامیہ سٹوڈنٹس کی گوجرانوالہ میں امام بارگاہوں پر حملوں کی مذمت

  

لاہور(خبر نگار)امامیہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن پاکستان کے مرکزی صدر اطہرعمران طاہر نے گوجرانوالہ کے مومن پورہ اور شاہ رخ کالونی کے امام بارگاہوں میں ہونے والی شہادتوں کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ ان شہادتوں سے پنجاب حکومت کی سیکیورٹی کی قلعی کھل گئی ہے ۔ دو امام بارگاہوں پر حملہ کیا گیا جبکہ دونوں امام بارگاہوں میں انتظامیہ نام کی کوئی چیز نہیں تھی ۔ اس واقعے نے ثابت کردیا ہے کہ پنجاب حکومت شرپسندوں کے ساتھ کی سرپرست اور دہشت گردی کے واقعات میں ملوث ہے ۔ مرکزی صدر کا کہناتھا کہ گوجرانوالہ میں ہونے والی شہادتیں ملک دشمن عناصر کے خلاف ٹھوس کاروائی نہ کرنے کا نتیجہ ہیں۔ پاکستان کی تمام سیاسی جماعتیں بشمول حکومت کالعدم جماعتوں کے خلاف کاروائی کرے ۔ اطہر عمران کا مزید کہناتھا کہ پشاور کی جیل میں عزاداری حضرت امام حسین علیہ السلام پر پابندی یزیدی عناصر کی کاروائی ہے۔ اُنہوں نے کہا کہ ملک کی دیگر جیلوں کی طرح پشاور جیل میں بھی عزاداری کو برپا کرنا ہماراآئینی وقانونی حق ہے۔ جسے دنیا کی کوئی طاقت ہم سے نہیں چھین سکتی۔اس موقع پر اُنہوںنے خیبر پختونخوا ہ، پنجاب اور وفاقی حکومت کو شدید نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ محرم الحرام کے دوران عزاداری کی مجالس اور جلوسوں کی خلاف کی جانیوالی کاروائی اسلام دشمن عناصر کی فکرکی عکاسی کرتی ہے۔ اُنہوں نے پنجاب اور وفاقی حکومت سے سانحہ گوجرانوالہ کے شہداءکے قاتلوں کی فوری گرفتاری اور اُن کے خلاف سخت کاروائی کا مطالبہ کیا ہے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 4 -