وہ کام جو پاکستانی مائیں اپنے بچوں کے ساتھ روز کرتی ہیں، اس تُرک ماں نے کیا تو معاملہ عدلت تک جاپہنچا، 5 برس کیلئے جیل جانے کا خطرہ

وہ کام جو پاکستانی مائیں اپنے بچوں کے ساتھ روز کرتی ہیں، اس تُرک ماں نے کیا تو ...
وہ کام جو پاکستانی مائیں اپنے بچوں کے ساتھ روز کرتی ہیں، اس تُرک ماں نے کیا تو معاملہ عدلت تک جاپہنچا، 5 برس کیلئے جیل جانے کا خطرہ

  

انقرہ(مانیٹرنگ ڈیسک) ترکی میں ناخلف بیٹے کو جوتا مارنے پر ایک ماں کو ایسی افسوسناک صورتحال کا سامنا کرنا پڑ گیا ہے کہ جان کر آپ بھی بے حد افسردہ ہوں گے۔ حریت ڈیلی کی رپورٹ کے مطابق 62سالہ سینے گوزیل نامی خاتون اور اس کا 38سالہ بیٹا حسن گوزیل ایک ہی اپارٹمنٹ میں دوالگ منزلوں پر رہتے ہیں۔ ان کے درمیان کسی خاندانی مسئلے پر اختلاف پیدا ہوگیا جس پر بیٹے نے ماں سے بدتمیزی کی۔ وہ اپنی ماں کے فلیٹ کے بیرونی دروازے پر کھڑا اس پر چلا رہا تھا کہ ماں نے اندر سے اس پر جوتا پھینک دیا جو اسے لگا بھی نہیں۔ مگر وہ ناخلف بیٹا پولیس سٹیشن چلا گیا اور ماں کے خلاف رپورٹ درج کروا دی۔

ریپ کا جھوٹا مقدمہ دائر کرنے پر 3 سال قید کاٹنے والی لڑکی نے رہائی کے بعد ایسا انکشاف کردیا کہ جان کر سزا دینے والا جج بھی شدیدپریشان ہوجائے گا

پراسیکیوٹر نے عدالت میں موقف اختیار کیا ہے کہ ”جوتا بھی ہتھیار کے زمرے میں آتا ہے لہٰذا خاتون کو جوتے سے حملہ کرنے پر 2سے 5سال قید کی سزا دی جائے۔“مقدمے کی سماعت مکمل ہو چکی ہے اور خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے کہ خاتون کو قید کی سزا سنا دی جائے گی۔سینے گوزیل کا عدالت میں کہنا تھا کہ ”میں نہیں جانتی تھی کہ جوتا بھی ہتھیاروں میں شمار ہوتا ہے۔ میں نے اپنے بیٹے کو اس لیے جوتا مارا کیونکہ اس نے میری توہین کی تھی، مگر وہ جوتا اسے لگا بھی نہیں، لیکن اگر لگ بھی جاتا تو کیا ہوتا؟ جوتے سے کوئی زخمی تو نہیں ہو جاتا۔پھر بھی اگر میں جانتی کہ جوتا ہتھیار ہوتا ہے تو میں اسے کبھی نہ مارتی۔ کیا دنیا میں کوئی ایسی ماں ہے جو غصہ آنے پر اپنے بچوں پر جوتا نہیں پھینکتی؟“سینے گوزیل کے وکیل کا عدالت میں کہنا تھا کہ ”مقدمے کا فیصلہ جو بھی آئے لیکن ایک بات طے ہو گئی کہ آئندہ کوئی ماں اپنے بیٹے پر جوتا پھینکنے کی جرا¿ت نہیں کرے گی۔“

مزید :

ڈیلی بائیٹس -