نئی امریکی خاتون اول سابقہ ماڈل اورکمیونسٹ معاشرے کی پروردہ ہیں

نئی امریکی خاتون اول سابقہ ماڈل اورکمیونسٹ معاشرے کی پروردہ ہیں

  

نیویارک (مانیٹرنگ ڈیسک) نئی امریکی خاتونِ اول میلینیا ٹرمپ کو آپ ڈونلڈ ٹرمپ کی اہلیہ کی حیثیت سے تو جانتے ہیں لیکن کم ہی لوگوں کو معلوم ہے کہ وہ دراصل کون ہیں ۔ میلینیا ڈونلڈ ٹرمپ کی تیسری بیوی ہیں جو1970میں پیداہوئیں اوران کاٹرمپ سے تعلق 1998ء میں قائم ہوا اور دونوں کی 2005ء میں شادی ہوئی اور اسی دوران ان کے ہاں بیٹا بھی پیدا ہوا جس کا نام ’بیرون‘ ہے۔ میلینیا سے پہلے ڈونلڈ ٹرمپ کی شادی مارلا میپلز کے ساتھ ہوئی جو ٹی وی سٹار، سابق ملکہ حسن اور ٹیفینی ٹرمپ کی والدہ ہیں، یہ شادی چند سال ہی قائم رہی۔ اس جوڑے کے درمیان معاشقہ اس وقت شروع ہوا جب ڈدونلڈ اپنی پہلی بیوی ایوانا کے ساتھ رہ رہے تھے اور ان دونوں کی شادی 1977ء میں ہوئی تھی۔ ان کے تین بچے، ایوانکا، ایریک اور ڈونلڈ ٹرمپ جونیئر ہیں جس کی عمر 38 سال ہے اور یہ اپنی موجودہ سوتیلی ماں یعنی میلینیا سے 8 سال بڑا ہے۔ ایوانا اور ڈونلڈ ٹرمپ 1980ء میں نیویارک کے نامی گرامی رئیس تھے لیکن 1992ء میں ان کی طلاق ہو گئی، ان کی طلاق کو ’’عوامی‘‘ طلاق بھی کہا جاتا ہے کیونکہ ان کے معاملات کسی سے ڈھکے چھپے نہ رہے تھے۔ ڈونلڈ ٹرمپ اور میلینیا کی شادی پام بیچ فلوریڈا میں ہوئی اس میں شریک ہونے والے 350 مہمانوں میں موجودہ ان کی مخالف صدارتی امیدوار ہیلری کلنٹن بھی شامل تھیں۔ ایک اندازے کے مطابق میلینیا نے جو شادی کا جوڑا پہنا اس کی قیمت 100,000 ڈالر تھی اور اس پر 1500 کرسٹلز جڑے تھے اور اس جوڑے کی تیاری پر 550 گھنٹے لگے تھے جبکہ میلینیا کو پہنائی جانے والی شادی کی انگوٹھی 12 قیراط کی تھی جس کی مالیت کا اندازہ 1.5 ملین یورو لگایا جاتا ہے۔ میلینیا ٹرمپ سلووینین، انگلش، فرانسیسی، سیربین اور جرمن زبانیں بولنے پر عبور رکھتی ہیں اور ان کی یہ صلاحیت وائٹ ہاؤس میں ہونے والی دعوتوں میں بہت کام بھی آ سکتی ہے۔ میلینیا ٹرمپ نیویارک شہر کی چمک دمک سے دور یوگوسلاویا میں پیدہوئیں اوروہیں پلی بڑھیں اور اس طرح وہ کمیونسٹ معاشرے میں پلنے بڑھنے والی امریکہ کی پہلی خاتونِ اول جبکہ امریکہ سے باہر پیدا ہونے والی دوسری خاتون اول ہیں۔ الیکشن سے صرف پانچ روز قبل کی گئی تقریر میں میلینیا ٹرمپ نے خاتونِ اول بننے کی صورت میں اپنے کردار پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا تھا کہ وہ سوشل میڈیا پر پیدا ہو جانے والے ’’انتہائی مطلبی اور انتہائی سخت‘‘ کلچر کا مقابلہ کریں گی۔ ڈونلڈ ٹرمپ کیساتھ ملاقات سے تین سال قبل میلینیا نے ’’فرنچ میگزین‘‘ کیلئے برہنہ فوٹو شوٹ بھی کیا۔ ’’دھاکہ خیز‘‘ تصاویر نیویارک پوسٹ سامنے لے کر آیا جس میں وہ سکینڈنیوین ماڈل ایما ایرکسن کے ساتھ برہنہ لیٹی ہوئی تھیں۔ یہ تصاویر بنانے والے فوٹو گرافر کا کہنا تھا کہ ’’یہ تصاویر خوبصورتی ہے نا کہ فحاشی۔‘‘ اس کا مزید کہنا تھا کہ ’’میں نے ہمیشہ خواتین سے محبت کی ہے۔ اندرونی ذرائع نے بتایا کہ ’’ میلینیا اس فوٹو شوٹ کے دوران بہت پروفیشنل رہی اور تمام وقت بہت خوش بھی۔‘‘ اس تمام تر معاملے پر ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا تھا کہ ’’یورپ میں اس جیسی تصاویر بہت فیشن ایبل اور عام سی بات ہے۔ سروے میں یہ بات سامنے آئی کہ صدارتی انتخاب میں شامل تمام امیدواروں کے شریک حیات میں سب سے کم مقبولیت میلینیا ٹرمپ کی تھی۔ امریکی تاریخ میں سب سے زیادہ مقبول شریک حیات جارج بش کی اہلیہ بابرا بش تھیں جبکہ براک اوباما کی اہلیہ مشعل اوباما کی مقبولیت بھی کافی اچھی تھی۔لیکن ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا ہے کہ ’’میری بیوی بہت شاندار ماں ہے جو اپنے بیٹے سے بہت پیار کرتی ہے اور مجھے یہ کہنا پڑ رہا ہے کہ وہ ایک ناقابل یقین خاتونِ اول ثابت ہو گی۔جیکی کنیڈی کی بائیو گرافر پامیلا کیوف کا کہنا ہے کہ میلینیا کو کسی سے کم نہیں سمجھنا چاہئے۔ ان کا کہنا ہے کہ جان ایف کنیڈی کی بیوی کی طرح میلینیا بھی خوبصورت، ذہین اور اپنے منصوبے رکھنے والی خاتون ہے۔2000ء میں میلینیا نے نیویارک ٹائمز سے گفتگو کرتے ہوئے کہا تھا کہ اگر وہ کبھی بھی خاتونِ اول بنیں تو وہ جیکی کنیڈی اور بیٹی فورڈ کی طرح بہت زیادہ ’’روائتی‘‘ ہوں گی۔

مزید :

صفحہ اول -