قانون نہیں توڑا ،پاکستا ن کیساتھ ایٹمی تعاون عالمی ضابطوں کے تحت ہے :چین

قانون نہیں توڑا ،پاکستا ن کیساتھ ایٹمی تعاون عالمی ضابطوں کے تحت ہے :چین

  

 بیجنگ(اے این این) چین نے ایک بار پھر واضح کیا ہے کہ پاکستان کو ایٹمی بجلی گھروں کے قیام میں تعاون کی فراہمی نیو کلیئر سپلائرز گروپ( این ایس جی) اور ایٹمی توانائی کے عالمی ادارے ( آئی اے ای اے) کے ضابطوں کے مطابق ہے، کوئی بین الاقوامی قانون یا ضابطہ نہیں توڑا۔ چینی وزارت خارجہ کے ترجمان لوکانگ نے میڈیا بریفنگ کے دوران برطانوی تھنک ٹینک کی رپورٹ کو مسترد کیا جس میں الزام عائد کیا گیا کہ پاکستان نے ایٹمی اور میزائل پروگرام کیلئے چین سے ٹیکنالوجی حاصل کی۔ ترجمان نے کہا کہ چین کے پاس ممنوعہ ٹیکنالوجی کے پھیلاؤ کی روک تھام کیلئے بین الاقوامی معیار کا نظام ہے۔اس حوالے سے دنیا کا کوئی دوسرا ملک نہیں ہے جو ممنوعہ ٹیکنالوجی کے سو فیصدعدم پھیلاؤ یقینی بنانے کا دعویٰ کرے۔ انہوں نے کہاکہ جہاں تک ممنوعہ ٹیکنالوجی کی برآمد اور عدم پھیلاؤ کی پالیسیوں کا تعلق ہے چین نے ہمیشہ اس حوالے سے ذمہ داری کا مظاہرہ کیاہے۔ انہوں نے کہاکہ اگر برطانوی تھنک ٹینک چین کے ممنوعہ ٹیکنالوجی کے عدم پھیلاؤ کے نظام کے بارے میں دلچسپی رکھتا ہے تو وہ اسے تجویز دیتے ہیں کہ وہ اس سلسلے میں چین کے متعلقہ قوائد و ضوابط کا باریک بینی سے مطالعہ کرے اور پھر اس حوالے سے چین کے نظام اور متعلقہ قوانین کادوسروں سے موازنہ کرے اور بتائے کہ کہاں ہم نے خلاف ورزی کی۔ انہوں نے کہاکہ اگر ثابت کیا جائے کہ کسی چینی ادارے نے اپنے مفادات کیلئے کوئی قانون توڑا ہے تو ہم اس سے سنجیدگی سے نمٹیں گے ۔

مزید :

صفحہ اول -