پسند کی شادی ،احاطہ عدالت میں لڑکے اور لڑکی کے گھر والوں میں لڑائی

پسند کی شادی ،احاطہ عدالت میں لڑکے اور لڑکی کے گھر والوں میں لڑائی

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائیکورٹ میں پسند کی شادی والے جوڑے کے گھر والے مقدمہ کی سماعت سے پہلے ایک دوسرے الجھ پڑے تاہم سیکیورٹی اہلکاروں نے بروقت کاروائی کرتے ہوئے فریقین کو تحویل میں لے لیا۔اوکاڑہ کی ثمینہ نے اپنے شوہر کے خلاف اپنے ہی اغوا کے الزام میں درج مقدمہ کے اخراج کے لئے لاہور ہائیکورٹ سے رجوع کیا اور درخواست پر سماعت کے لئے لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس شہباز رضوی کی عدالت پہنچی ،جہاں لڑکی کے گھر والے بھی موجود تھے۔ فریقین کے درمیان کسی بات پر نوک جھوک شروع ہوئی، لڑکی کے گھر والوں کا موقف تھا کہ لڑکی پہلے سے شادی شدہ ہے۔ اس لئے نکاح پر نکاح کیا گیا ہے،کیا اس طرح نکاح ہوسکتاہے ؟ لڑکی بار بار کہتی رہی اس کے شوہر کے خلاف جھوٹا مقدمہ کیوں درج کرایا گیا ہے۔ اسی دورا ن فریقین ایک دوسرے سے الجھ پڑے،عدالت عالیہ کے سکیورٹی اہلکاروں نے کارروائی کرتے ہوئے تمام افراد کوتحویل میں لے لیا اور انہیں اپنے ساتھ کنٹرول روم لے گئے جہاں مقدمے کی سماعت تک انہیں روکے رکھا گیا۔

مزید :

صفحہ آخر -