وزیراعلیٰ کے مشیروں کے خلاف درخواست کی سماعت ملتوی

وزیراعلیٰ کے مشیروں کے خلاف درخواست کی سماعت ملتوی

  

کراچی (اسٹاف رپورٹر)سندھ ہائی کورٹ نے وزیراعلیٰ سندھ کے مشیروں اور معاون خصوصی کی تقرریوں کے خلاف دائر درخواست کی سماعت 22نومبر تک ملتوی کردی ہے ۔بدھ کو سندھ ہائی کورٹ کے چیف جسٹس سجاد علی شاہ پر مشتمل دو رکنی بنچ کی عدالت میں درخواست گزار مولوی اقبال حیدر کی جانب سے موقف اختیار کیا گیا تھا کہ وزیر اعلی سندھ نے 5 مشیر رکھے ہوئے ہیں جبکہ معاون خصوصی کی تعداد کا کوئی ذکر نہیں ہے اس کا مطلب یہ نہیں کہ وزیر اعلیٰ جتنے چاہے معاون خصوصی رکھے۔ مشیر اور معاون خصوصی کابینہ کے اجلاس میں شریک ہوتے ہیں اور وزیر کے اختیارات استعمال کرتے ہیں، جس پر عدالت نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ یہ کیسے ہو سکتا ہے کہ مشیر اور معاون خصوصی کابینہ کے اجلاس میں شرکت کرے۔ عدالت نے درخواست گزار کو حکم دیا کہ وہ آئندہ سماعت پر اجلاس میں حاضری شیٹ پیش کرے ۔عدالت اس معاملے میں قانونی نقطہ بھی اٹھا سکتی ہے ۔دوران سماعت وزیر اعلیٰ کے وکیل خالد جاوید کا عدالت میں کہنا تھا کہ معزز عدالت مشیر قانون مرتضی وہاب کی تقرری اور اختیارات سے متعلق فیصلہ محفوظ کر چکی ہے۔ عدالت سے استدعا ہے کہ فیصلہ آنے تک اس کیس کی سماعت ملتوی کی جائے عدالت نے وکیل صفائی کی استدعا پر سماعت 22نومبر تک ملتوی کردی۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -