قوموں کی ترقی و خوشحالی کا راز با مقصد اور اعلٰی تعلیم کے فروغ میں مضمر ہے، محمد عاطف

قوموں کی ترقی و خوشحالی کا راز با مقصد اور اعلٰی تعلیم کے فروغ میں مضمر ہے، ...

  

پشاور( سٹاف رپورٹر)صوبائی وزیر تعلیم محمد عاطف خان نے کہاہے کہ شاعر مشرق علامہ محمد اقبال نے برصغیر کی سیاسی تاریخ کے ایک نہایت نازک دور میں مسلمانوں کی رہنمائی کا فریضہ انجام دیا اور مسلمانوں کو مایوسی اورلسانی وقومی عصبیت سے نکال کر ان کے درمیان اخوت اور مساوات کے جذبے کو پروان چڑھایا۔اسی طرح عظیم پختون فلسفی وشاعر غنی خان نے بھی قوم کو حریت فکر کا درس دیا جو ان دونوں عظیم شاعروں کو دیگر شاعروں سے ممتاز کرتے ہیں ۔وہ قومی قلمی سفر پاکستان کے زیر اہتمام اُردواور پشتو زبان کے ممتاز ادیب ،شاعر،کالم نگار اور محقق پروفیسر گوہر نوید کی کتاب ،اقبال اور غنی خان کی شاعرانہ مماثلتیں ،کی تقریب رونمائی سے بحیثیت مہمان خصوصی خطاب کر رہے تھے ،جس کی صدارت ممتاز ادیب وشاعر رفیق عاصی نے کی ۔اس موقع پر محمد سعید سعید، ماسٹر شیر رحمان ، پروفیسر اصغر نسیم ، حسین احمد صادق ، پروفیسر شفقت ہما ، فیض الوہاب فیض ،شعیب صادق اور دیگر نے کتاب اور صاحب کتاب گوہر نویدکے بارے میں مقالے پڑھے اور اس کتاب کو اُردو اور پشتو زبان کے ان عظیم شعراء کے حوالے سے اپنی نوعیت کی ایک منفرد کوشش قرار دیا ۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے محمد عاطف خان نے کہا کہ ادیب اور شاعر معاشرے میں پائی جانے والی خوبیوں اور خامیوں پر عمیق نظر رکھتے ہیں اور ان کی آنکھیں وہ کچھ دیکھ لیتی ہیں جو ایک عام انسان محسوس نہیں کر سکتا اور یہی دانشور اور ادیب معاشرے کی رہنمائی کا فریضہ ادا کرتے ہیں جس طرح علامہ محمد اقبال نے مسلمانوں کو خودی کا درس دیا اسی طرح غنی خان نے بھی معاشرے میں بگاڑ کے ذمہ داروں کی نشاندہی نہایت ہی خوبصورت انداز میں کی اور آج بھی ہم اقبال اور غنی خان کی فکر کو لے کر آگے بڑھیں تو موجودہ دور کی مشکلات کو رفع کیا جا سکتا ہے ۔اُنہوں نے کہا کہ لسانی اور نسلی تعصبات کا خاتمہ وقت کی ضرورت ہے اور ہمیں اپنی تمام تر توانائیوں کو قومی یکجہتی کو اُجاگر کرنے اور قوم کو درپیش مسائل کے حل پر صرف کرنی چاہیئے۔محمد عاطف خان نے اس تاثر کو غلط قرار دیا کہ ان کی حکومت کوبعض اداروں کے نام کی وجہ سے کوئی مسئلہ ہے انہوں نے کہا کہ ہم ناموں کی بجائے کام پر یقین رکھتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ مردان کلچرل سنٹر قائم کرنے کے لیے عملی اقدامات اُٹھائے جائیں گے اور اس حوالے سے مقامی ادبی حلقوں کی مشاورت سے جگہ کا تعین کیا جائے گا۔اُنہوں نے اقبال اور غنی خان کی شاعرانہ مماثلتوں پر پروفیسر گوہر نوید کے تحقیقی کام کو سراہااور اس سلسلے کو آگے بڑھانے کے لیے حکومتی سطح پر ان کی بھر پور معاونت کا اعلان کیا۔ پروفیسر گوہر نوید نے کہا کہ وقت کا تقاضا ہے کہ مفکرین ،نقاد اور محققین اقبال کی طرح غنی خان کی شاعری کی درست تشریح وتوضیح کریں تاکہ آنے والی نسلیں ان کی فلسفیانہ بصیرت اور شاعرانہ عظمت سے روشناس ہوکر ایک پرامن ماحول میں آزادی کی نعمتوں سے مستفید ہوسکیں ۔

پشاور( سٹاف رپورٹر )خیبر پختونخوا کے وزیر ابتدائی و ثانوی تعلیم محمد عاطف خان نے کہا ہے کہ کسی بھی ملک کی ترقی و خوشحالی کا راز بامقصد اور اعلیٰ تعلیم کے فروغ میں مضمر ہے اور اس شعبے کی اہمیت و افادیت کے پیش نظر تعلیم کی ترقی موجودہ پی ٹی آئی حکومت کی اولین ترجیح رہی ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے بدھ کے روز پشاور میں ابتدائی و ثانوی تعلیم کے شعبے میں شروع کئے گئے مختلف منصوبوں پر کام کی رفتار سے متعلق جائزہ اجلاس کی صدار ت کرتے ہوئے کیا۔اجلاس میں دوسروں کے علاوہ سیکرٹری ابتدائی و ثانوی تعلیم ڈاکٹر شہزاد بنگش، سپیشل سیکرٹری قیصر عالم اورڈائریکٹر سکولز محمد رفیق خٹک بھی موجود تھے۔اجلاس میں فرنیچر پراجیکٹ، 500آئی ٹی لیب کے قیام، تعلیمی بورڈز کے زیر انتظام کھیلوں کی سہولیات کی فراہمی ، کنڈیشنل گرانٹ، پی ٹی سی فنڈزپلے ایریاز،گرلز کیڈٹ کالج مردان کا قیام، سمارٹ سکولز، سٹینڈرڈائزیشن آف ہائر سیکڈری سکولز، برٹش کونسل کے تعاون سے ٹیچرز ٹریننگ پروگرام،سرکاری سکولوں میں ناپید سہولیات کی فراہمی اورسکول بیسڈ ریکروٹمنٹ سمیت پرائیوٹ سکولز ریگولیٹری اتھار ٹی بل جیسے امور پر اب تک ہونے والی پیش رفت اور اس ضمن میں حائل رکاؤٹوں پر تفصیلی بحث ہوئی اور کئی اہم فیصلے بھی کئے گئے ۔بریفنگ کے دوران اجلاس کو بتایا گیا کہ آئی ٹی لیب کے قیام کیلئے ٹینڈر پراسس مکمل ہو گیا ہے اسی طرح گرلز کیڈٹ کالج مردان کا سنگ بنیاد جون2017ء سے پہلے متوقع ہے جبکہ سٹینڈرڈ ائزڈ سکولز پراجیکٹ کے تحت 45 سکولوں پر کام شروع کر دیا گیاہے۔ اجلاس سے اپنے مختصر خطاب میں وزیر تعلیم محمد عاطف نے تمام منصوبوں پر کام کی رفتار تیز کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ وہ عملی کام پر یقین رکھتے ہیں اور حکومت کی طرف سے لمحہ بہ لمحہ جاری کردہ ہدایات پر عمل درآمد یقینی بنانے کیلئے تمام ممکن اقدامات اٹھائے جائیں تاکہ تمام منصوبے مقررہ وقت میں پایہ تکمیل تک پہنچائے جاسکیں۔

مزید :

پشاورصفحہ اول -