میپکو نے بجلی بندش کا دورانیہ بڑھا دیا، گیس پہلے سے ہی غائب

میپکو نے بجلی بندش کا دورانیہ بڑھا دیا، گیس پہلے سے ہی غائب

  

وہاڑی،سرائے سدھو،کوٹ ادو،کہروڑ پکا،خانقاہ شریف(نمائندگان) وزیراعظم نے حکم دیا کہ بجلی کی لوڈشیڈنگ آدھی کردی جائے لیکن میپکو کے ذمہ داران نے بندش کا دورانیہ بڑھادیا،گیس صبح،رات اور دوپہر کے اوقات میں بھی غائب رہنے لگی،پریسر بے حد کم،کھانے پکنا دوبھر ہوگئے،وہاڑی سے بیورو رپورٹ،نامہ نگار کے مطابق وزیر اعظم پا کستان میاں نوا ز شریف کا حکم واپڈا حکام نے ہوا میں اُڑا دیا ، بجلی کی طویل غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کا سلسلہ کم ہونے کی بجا ئے روز بروز اضافہ ہونے لگا ، عوامی مشکلات میں اضافہ ہونے لگا ، جس پر عوامی وسماجی اورشہری حلقوں اعظم علی ، ریاض احمد ، محبت علی ، ایم (بقیہ نمبر35صفحہ7پر )

باسط ، محمد عظیم ، سلطان بھٹی ، معراج دین ، شفیق علی ودیگر نے احتجاج کرتے ہوئے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ وزیر اعظم پاکستان کے احکامات نہ ماننے والے واپڈا حکام کے خلاف فی الفور کا رروائی عمل میں لا ئی جا ئے اور بجلی کی طویل غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کا خاتمہ کیا جا ئے ۔سرائے سدھو سے نمائندہ خصوصی کے مطابق وزیر اعظم کے اعلان کے بعد سرائے سدھو میں لوڈشیڈنگ دگنی کردی گئی ،اکبر آباد فیڈر پر لائن لاسز زیادہ ہیں ،میپکو اہلکاران کا موقف تفصیلات کے مطابق ملک بھر میں لوڈ شیڈنگ کو نصف کرنے کے وزیر اعظم کے حکم کے بعدسرائے سدھو کے فیڈر پر لوڈشیڈنگ 6کھنٹے سے بڑھا کر 8کھنٹے کردی گئی اس سلسلہ میں جب میپکو کے ذمہ داران سے معلوم کیا گیا تو انہوں نے بتایا کہ اکبر آباد فیڈر پر لائن لاسز بہت زہادہ ہیں جس کی وجہ سے لوڈ شیڈنگ میں اضافہ کیا گیا ہے دوسری طرف سرائے سدھو کے شہریوں محمد اختر زاہد،محمد امجد،راؤ راشد،محمد اقبال،افضل بھٹی ودیگر نے اپنے شدید ردعمل میں کہا کہ لائن لاسز میں اضافہ کی سزا شہریوں کو دینے کہ بجائے میپکو چیف میپکو سب ڈویژن سرائے سدھو کے لائن مینز،لائن سپرنٹنڈنٹ،ایس ڈی او کے خلاف تادیبی کارروائی کریں جن کی ملی بھگت سے چوری عروج پر پہنچی انہوں نے الزام عائد کیاکہ میپکو کے عملہ کے اپنے تمام میٹرز ان کے گھروں کے اندر نصب ہیں اور ان کو انہوں نے منی گرڈ اسٹیشن بنا کر کئی کئی گھروں کو بجلی فراہم کی ہوئی ہے جوکہ لائن لاسز کی اصل وجہ ہے انہوں نے میپکو چیف سے مطالبہ کیا کہ فوری طور پر میپکو سب ڈویژن سرائے سدھو کے لائن سپرنٹنڈنٹ اور لائن مینز کو ان کے عہدوں سے معطل کرکے غیر جانبدارانہ تحقیقات کروائی جائیں جائیں تو اکبر آباد فیڈر پر لائن لاسز میں اضافہ فوری طور پر رک جائے گا ۔کوٹ ادو سے تحصیل رپورٹر کے مطابق کوٹ ادو کے گنجان آباد علاقے ریلوے لائن پار آبادی سمیت شہری علاقوں میں سوئی گیس کی لائن میں پریشر انتہائی کم،دن اور رات کے اوقات میں لوڈ شیڈنگ بھی شروع کردی گئی،خواتین کو کھانا پکانے میں شدید دشواری، ملازمین سمیت سکول کے طلباء وطالبات بغیر کھائے پئے سکول جانے لگے،صارفین کا شدید احتجاج،تفصیلات کے مطابق کوٹ ادو کے گنجان آباد علاقے ریلوے لائن پار کی آبادی بخاری روڈ،سینما روڈ،محلہ غریب آباد،وارڈ نمبر14/E،ضیاء کالونی،ٹبہ کربلا،محلہ نورے والا،محلہ گانمن والا،محلہ نیازی والا ویگرلائن پار علاقوں سمیت شہری علاقوں محلہ موچی والا،قریشی ٹاؤن،وارڈ نمبر1نزد بس اڈہ میں سوئی گیس کا پریشر انتہائی کم ہو گیا ہے جسکی وجہ سے گھریلو خواتین کو کھانا پکانے میں شدید دشواری کا سامنا ہے ،دوسری طرف رات کے اوقات 9بجے سے7بجے صبح تک غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کے علاوہ شہری علاقوں محلہ موچی والا،قریشی ٹاؤن،وارڈ نمبر1نزد بس اڈہ میں دن کے اوقات میں بھی لوڈ شیڈنگ شروع کر دی گئی ہے،مذکورہ ٹائم میں سوئی گیس نہ ہونے پرخواتین کو کھانا بنانے میں شدید دشواری کا سامنا ہے جبکہ صبح کے وقت سوئی گیس نہ ہونے سے سرکاری ونجی ملازمین سمیت سکول جانے والے طلباء وطالبات بغیر ناشتہ کئے جانے پر مجبور ہو گئے ہیں،صارفین نے محکمہ سوئی گیس کے خلاف شدید احتجاج کرتے ہوئے فوری طور پر لوڈ شیڈنگ ختم اور پریشر بڑھانے کا مطالبہ کیا ہے۔کہروڑ پکا سے تحصیل رپورٹر کے مطابق واپڈانے ایک مرتبہ پھر غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ کا آغازکردیاہے۔ جس سے کاروبارزندگی بری طرح متاثرہورہاہے اور شہریوں کو شدید پریشانی کا سامناہے۔ شہریوں سے شدیداحتجاج کرتے ہوئے غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ ختم کرنے کا مطالبہ کیاہے۔ خانقاہ شریف سے سپیشل رپورٹر کے مطابق خانقاہ شریف ،سمہ سٹہ میں صبح سویرے گیس کی لوڈ شیڈنگ اور لو پریشر کے باعث گھریلو صارفین کو شدید مشکلات کا سامنا ہے ۔گیس غائب ہوجانے کی وجہ سے خواتین کے لئے بچوں کو اسکول و مردوں کو کام پر بھیجنے سمیت امور خانہ داری کی انجام دہی میں مشکل پیش آرہی ہیں ۔خواتین کا کہنا ہے کہ دن بھر گیس اپنی مرضی سے آتی اور جاتی ہے ، نہ ہی ناشتہ تیار ہو پاتا ہے اور نہ ہی دوپہر کا کھان وقت پر تیارہوتا ہے ۔خواتین کا مزید کہناتھاکہ دوپہر اور صبح کے وقت اگر گیس دستیاب ہو بھی تو پریشر اتنا کم کہ کھانا بنانا دو بھر ہو جاتا ہے ۔دوسری جانب شہر میں رات کے 10 بجتے ہی گیس مکمل بند ہو جاتی ہے جو صبح 5 بجے تک بند رہتی ہے۔صورتحال اس قدر خراب ہونے کے باوجود ماہانہ گیس کے بل ہزاروں روپے وصول ہو رہے ہیں۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -