گزشتہ روز منگھوپیر میں مقابلے میں ہلاک ملزمان انتہائی خطرناک دہشت گرد اور متعدد وارداتوں میں مطلوب تھے: ترجمان رینجرز

گزشتہ روز منگھوپیر میں مقابلے میں ہلاک ملزمان انتہائی خطرناک دہشت گرد اور ...
گزشتہ روز منگھوپیر میں مقابلے میں ہلاک ملزمان انتہائی خطرناک دہشت گرد اور متعدد وارداتوں میں مطلوب تھے: ترجمان رینجرز

  

کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک) گزشتہ روز منگھو پیر میں مقابلے میں ہلاک ہونے والے ملزمان کی شناخت ہوگئی ہے اور ترجمان رینجرز کا کہنا ہے کہ ہلاک ہونے والے دہشت گردوں کے القاعدہ، تحریک طالبان اور داعش کے ساتھ تعلقات تھے۔

منگھو پیر میں رینجرز کی کاروائی ،3 دہشت گرد ہلاک،1رینجراہلکار زخمی

ترجمان رینجرز کی جانب سے جاری بیان میں بتایا گیا ہے کہ ہلاک ہونےوالوں میں سلمان عرف یاسر، محمد حسین عرف مستری پٹھان شامل ہیں۔ یہ تینوں دہشت گرد انتہائی خطرناک تھے اور دہشت گردی کی متعدد وارداتوں میں انتہائی مطلوب تھے۔

دہشت گرد سلمان عرف یاسر تحریک طالبان سوات کا امیر اور مرکزی لیڈر تھا جس نے 2008ءمیں پاک آرمی کے 4 اہلکاروں کو یرغمال بنایا تھا ۔ یہ دہشت گرد طالبان سوات میں عوام اور پاک فوج کیساتھ لڑائی اور خودکش حملوں کی منصوبہ بندی میں بھی ملوث رہا ہے۔

بھتہ نہ دینے پر مکان پر دستی بم حملہ، 20لاکھ کا مطالبہ کردیا

ترجمان رینجرز کے مطابق دہشت گرد محمد حسین عرف مستری پٹھان سانحہ صفورہ کا حصہ تھا ور پولیس اہلکاروں کی ٹارگٹ کلنگ میں بھی ملوث تھا۔

مزید :

کراچی -