سٹیل مل میں تنخواہوں کی عدم ادائیگی ، انصاف ورکرز اتحاد کا کراچی پریس کلب کے باہر مظاہرہ،مطالبات پورے نہ ہوئے تو نیشنل ہائی وے بند کردیں گے:حلیم عادل شیخ

سٹیل مل میں تنخواہوں کی عدم ادائیگی ، انصاف ورکرز اتحاد کا کراچی پریس کلب کے ...
سٹیل مل میں تنخواہوں کی عدم ادائیگی ، انصاف ورکرز اتحاد کا کراچی پریس کلب کے باہر مظاہرہ،مطالبات پورے نہ ہوئے تو نیشنل ہائی وے بند کردیں گے:حلیم عادل شیخ

  

کراچی(مانیٹرنگ ڈیسک)انصاف ورکر اتحاد کی جانب سے14ہزار سے زائد محنت کشوں کو تنخواہیں نہ دینے اور سٹیل مل کی بحالی کے لیے کراچی پریس کلب کے باہر انوکھے انداز میں مظاہر کیا گیا،ملازمین اپنے خاندانوں سے سمیت مظاہرے میں شریک تھے جنھوں نے ہاتھوں میں معصوم بچوں کو اٹھا کر بچہ برائے فروخت کے بینرز اٹھار کھے تھے ۔

مزید پڑھیں:وزیرِداخلہ سے سعودی سفیر کی ملاقات, پاک سعودی تعلقات، سعودی سفارت کار کے قتل پربات چیت

پاکستان تحریک انصاف سندھ کے سینئر نائب صدر حلیم عادل شیخ کا مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ محنت کشوں کے گھروں میں فاقے پڑے ہوئے ہیں، لاتوں کے بھوت باتوں سے نہیں مانتے ،اگر مطالبات پورے نہ کئے تو ہم مزدوروں کے ساتھ ملکر نیشنل ہائی وے اور ریلوئے ٹریک بند کردیں گے۔انہوں نے کہا کہ اگر یہ اتفاق فاؤنڈری ہوتی تو اس طرح بند نہ ہوتی ،جب حکمران دبئی میں لوہے کی مل چلا سکتے ہیں تو پاکستان میں ایسا  ممکن کیوں نہیں ؟ تحریک انصاف اقتدار میں آکر پاکستان سٹیل مل کے محنت کشوں کے مسائل حل کرنے کے لیے ان کے شانہ بشانہ جدوجہد کررہے ہیں،چند سیاسی جماعتوں نے حکومت کے ساتھ مل کر سٹیل مل کی بربادی میں اہم کردار ادا کیا ہے ،سٹیل مل کے سر پر نجکاری کا خنجرلٹکانے والے حکومتی لوگ اس ملک کے کبھی خیر خواہ نہیں ہوسکتے۔

مزید پڑھیں:کوہستان ویڈیو سکینڈل، لڑکیاں زندہ یا قتل کر دی گئیں؟سپریم کورٹ کا سیشن جج کو دو ہفتے میں رپورٹ جمع کرانیکا حکم

انصاف ورکر اتحاد کے رہنماؤں میں یاسین جامڑو ،سرور خان نیازی ،عبدالرسول بلالی عامر اکرم اور دیگر نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ14ہزار سے زائد ملازمین کی تنخواہیں جان بوجھ کر روک رکھی ہیں، جبکہ تین سال سے ریٹائرز ملازمین کے بقایا جات بھی ادا نہیں کیئے گئے، میڈیکل اور رتعلیم کی سہولیات بھی بند کردی گئی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ افسوس کے محنت کشوں کے نام پر سیاست کرنے والوں کو ہمارا دکھ کیوں نہیں دکھائی دے رہا ،  پاکستان سٹیل مل کرپشن کی وجہ سے برباد ہوئی جس کے ذمہ دار حکمران ہیں، سٹیل مل 2008ء تک ایک منافع بخش ادارہ تھا جو اربوں کے ٹیکس اداکرتا تھا،جسے سرکار کی من پسندیونین کے رہنماؤں اور بدانتظامی کے باعث تباہ کیا گیا۔ انہوں نے مخیر حضرات سے اپیل کی کہ وہ ہمارے بچوں کو تب تک گود لے لیں جب تک سٹیل مل کی بحالی نہ ہوجائے اور ہمیں وقت پر تنخواہیں ، بقایا جات ،میڈیکل اور تعلیم نہ ملنا شروع ہوجائے۔

مزید :

کراچی -