یہ معروف خاتون ریسلر تو آپ نے دیکھی ہوگی ، اب یہ کس حال کو پہنچ گئی ہے؟ حقیقت جان کر آپ بھی کانوں کو ہاتھ لگانے لگیں گے

یہ معروف خاتون ریسلر تو آپ نے دیکھی ہوگی ، اب یہ کس حال کو پہنچ گئی ہے؟ حقیقت ...
یہ معروف خاتون ریسلر تو آپ نے دیکھی ہوگی ، اب یہ کس حال کو پہنچ گئی ہے؟ حقیقت جان کر آپ بھی کانوں کو ہاتھ لگانے لگیں گے

  

نیو یارک (نیوز ڈیسک) میڈیا کی چکا چوند میں رہنے والے افراد کیلئے کیمروں کی لائٹس نشے کی طرح ہوتی ہیں اور جونہی یہ لائٹس ذرا مدھم پڑتی ہیں تو ان کیلئے زندگی گزارنا مشکل ہوجاتا ہے اور ایسی ایسی حرکتیں کرنے لگتے ہیں کہ میڈیا کو مجبوراً انہیں کوریج دینی پڑتی ہے۔ لیکن جب توجہ حاصل کرنے کے تمام حربے ناکام ہوجاتے ہیں تو بہت سے لوگ نشے کے عادی ہو کر موت کی وادیوں میں پہنچ جاتے ہیں جس کی واضح مثال خاتون ریسلر جون لورر عرف شائنا ہیں جو نشے کی زیادہ ڈوز لینے کی وجہ سے موت کی وادی میں پہنچ گئیں۔

برطانوی اخبار ڈیلی میل کے مطابق شائنا نامی امریکی خاتون ریسلر اپنے کیریئر کے عروج کے دنوں میں سالانہ 10 لاکھ ڈالر کماتی تھیں جبکہ وہ پلے بوائے میگزین کی کور گرل بھی رہیں لیکن آمدن میں کمی اور میڈیا کی توجہ کم ہونے کے باعث ہیروئن کے نشے کی عادی ہوگئیں اور رواں سال کے آغاز میں زیادہ ڈوز لینے کی وجہ سے موت کی وادی میں پہنچ گئیں۔ اپریل میں جان کی بازی ہارنے والی خاتون ریسلر کی آخری رسومات رواں ماہ ادا کی گئیں اور ان کی میت جلانے کے بعد اس کی راکھ کو ہیروں سے مزین مرتبان میں سمندر برد کیا گیا ۔

شائنا نے گریجوایشن مکمل کرنے کے بعد 1992 میں بطور ریسلر اپنے کیریئر کا آغاز کیا تھا۔ 5 فٹ 10 انچ کی خوبصورت خاتون ریسلر نے نہ صرف خواتین بلکہ مردوں سے بھی ریسلنگ کے مقابلے لڑے۔ 2001 تک ان کا ستارہ خوب عروج پر رہا لیکن اس کے بعد ان کی مقبولیت میں تیزی سے کمی آنے لگی اور انہوں نے میڈیا میں اِن رہنے کیلئے منفی ہتھکنڈے آزمانے شروع کردیے۔مقبولیت میں کمی آنے کے بعد شائنا نے بدنام زمانہ پلے بوائے میگزین کیلئے تصاویر کھنچوائیں، ایک ریڈیو پروگرام میں باقاعدگی سے بطور مہمان شرکت کرنے لگیں اور اس کے علاوہ انہوں نے کچھ فحش فلموں میں بھی کام کیا۔

بھارت میں نامعلوم شخص پانچ سو اور ہزار کے نوٹوں سے بھر ی بوری کوڑے میں پھینک کر فرار

شائنا کی بہن کیتھی ہیملٹن کا کہنا ہے کہ شائنا کے کیریئر کی تنزلی کی ابتدا اس وقت شروع ہوئی جب انہیں ڈبلیو ڈبلیو ای کی جانب سے 4 لاکھ ڈالر کی پیشکش کی گئی لیکن اس نے 10 لاکھ ڈالر سے کم پر رضا مندی ظاہر نہ کی اور رنگ سے باہر ہوگئی، بعد ازاں وہ ساری زندگی اپنے اس اقدام پر افسردہ رہی ۔

کیتھی کا مزید کہنا تھا کہ ڈبلیو ڈبلیو ای سے باہر ہونے کے بعد شائنا نے باقاعدگی سے نشہ کرنا شروع کردیا۔ میں نے بہت بار اس کی مدد کرنے کی کوشش کی لیکن وہ آگے سے دھمکیاں دینے لگتی تھی جس کی وجہ سے میں شدید خوف میں مبتلا ہوگئی اور مجھے لگنے لگا کہ شائنا کسی بھی وقت ایک چاقو یا بندوق لے کر میرے دروازے پر کھڑی ہوگی۔

شائنا نے مرنے سے پہلے اپنی زندگی کی ایک آخری ویڈیو بھی ریکارڈ کی جس میں وہ ساحل سمندر پر اپنے گھر میں موجود ہوتی ہے ۔ جس کے بعد وہ نشہ لیتی ہے جو بہت زیادہ تعداد میں ہوتا ہے ۔ زیادہ تعداد میں نشہ لینے کے باعث وہ سمندر کنارے ہی موت کی وادیوں میں پہنچ گئی۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -